ٹیم کارکردگی نہ دکھائے تو کپتان کو تبدیل کرنا پڑتا ہے

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کی تبدیلی کے بعد سیاسی حلقوں میں یہ بحث شروع ہو گئی ہے کہ کیا ٹیم اگر کارکردگی نہ دکھائیں تو کپتان کو تبدیل کرنا ضروری ہوجاتا ہے ۔مائنس ون فارمولا کا آغاز پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد سے ہوگیا ہے سری لنکا کے ہاتھوں ٹی ٹوئنٹی میچوں میں شکست کے بعد سرفراز احمد کو پاکستان ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کی قیادت سے بھی الگ کر دیا گیا ہے اس لیے سیاسی اور غیر سیاسی حلقوں میں یہ تبصرے ہورہے ہیں کہ کیا ٹیم کارکردگی نہ دکھائے تو فقدان کو تبدیل کرنا ضروری ہوجاتا ہے ۔اگر یہی فارمولہ ہے تو پھر پاکستان تحریک انصاف کی ٹیم اگر کارکردگی نہیں دکھا سکیں تو کیا کپتان کو تبدیل کیا جائے گا ؟اپوزیشن جماعتوں نے حکومتی اقدامات  کے خلاف عدم اعتماد شو کرتے ہوئے تحریک شروع کرنے کا اعلان کر رکھا ہے پاکستان پیپلزپارٹی نے احتجاجی جلسہ کیا ہے اور مولانا فضل الرحمن احتجاج یا لانگ مارچ اور دھرنا دینے جا رہے ہیں یہاں پاکستان مسلم لیگ نون اور دیگر سیاسی جماعتیں بھی شمولیت اختیار کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں سوال اٹھایا جا رہا ہے کہ کیا مائنس مان فارمولے کا جو آغاز پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کی تبدیلی سے ہوا ہے وہی فارمولہ اسلام آباد میں بھی آگے بڑھانے کی کوشش کی جائے گی ؟

اپنا تبصرہ بھیجیں