ایرانی پیٹرول اور ڈیزل پے پابندی لگائی جائے

آج کمشنر مکران اور ان  کے ساتھیوں کی روڈ حادثے میں ہلاکت کے بعد  بہت سے لوگ سوشل میڈیا میں کہہ رہے ہیں کہ ایرانی پیٹرول اور ڈیزل پے پابندی لگائی جائے.تفتان سے لے کے مکران ،نوشکی،چاغی، دالبندین اور کئی دوردراز علاقوں کے روزی روٹی اسی ایرانی تیل پے وابستہ ہے بلوچستان کی %60 روزگار کا ذریعہ ایران بارڈر سے منسلک ہے، جس کی وجہ سے لاکھوں لوگ برسر روزگار ہیں حادثات کی بڑی وجہ بلوچستان بھر کے سنگل روڑ اور ڈرائیور حضرات کی اوررٹیکنگ اور غلط ڈرائیونگ ہے نہ کے ایرانی تیل، آپ کو یہاں اک مثال دیتی چلوں سندھ کے ڈسٹرکٹ جامشورو سے لے کے سہون شریف تک روڈ سنگل ہے جس کی وجہ سے اس روڈ پے ہر روذ حادث کی خبریں آتی رہتی ہیں اور اسی سنگل روڈ کی وجہ سے ہزاروں افراد ہلاک ہو چکے ہیں اس روڈ پے تو ذمیاد گاڑیاں یا ایرانی تیل سپلائی نہیں ہوتی تو پھر ذمہ دار کون؟میری ان تمام منفی سوچ اور سرکاری عہدوں پر فائز بھائیوں سے گزارش ہے کہ لاکھوں افراد کو بیروذگار کرنے کا پروپیگنڈا بند کر دیں جس کی وجہ سے لاکھوں گھروں کے چھولے جلتے ہیں..تحریر انیسہ بلوچ
| | Virus-free. www.avast.com |

اپنا تبصرہ بھیجیں