جیسا باپ، ویسا بیٹا – جہانگیر صدیقی اور علی جہانگیر صدیقی کی مختصر کہانی

رپورٹ: جیوے پاکستان ڈاٹ کام 
آج ذکر ہوگا جے  ایس بینک اور گلوبل کی لمبی چھلانگوں کا ۔یہ گروپ کی کہانی بہت ہی مختصر ہے یہ دو لفظوں پر گھومتی ہے ۔کامیابی اور  بڑی کامیابی ۔ آپ نے اکثر لوگوں کو کہتے  سنا ہوگا ۔جیسا باپ، ویسا بیٹا ۔ یہ بات یہ اس گروپ کے حوالے سے بالکل سچ ثابت ہوئی ہے جہانگیر صدیقی اور ان کے صاحبزادے علی جہانگیر صدیقی ۔کامیابی اور مقبولیت کی شاہراہ پر قدم سے قدم ملا کر آگے بڑھے ۔جو شاندار روایات والد نے قائم کی ہیں بیٹا ان کے ساتھ مل کر انتہائی باوقار انداز سے انہیں لے کر آگے بڑھتا جا رہا ہے ۔یہ باپ بیٹا قسمت کے دھنی ہیں ۔قدرت مہربان ہے ۔مٹی کو ہاتھ لگاۓ تو سونا بن جائے ۔یہ مثال انہوں نے مختلف شعبوں میں کامیابیاں حاصل کرکے سچ ثابت کر دکھائی ہے ۔ان کے ساتھ بے شمار لوگوں کی دعائیں ہیں کچھ اپنی نیکیاں کام آرہی ہیں  اوپر والا خاص مہربان ہے کچھ خاص کرم ہے اور باقی ان کی اپنی محنت لگن جذبہ جستجو ذہانت قابلیت اور صلاحیت کا کمال ہے ۔لیکن ایسا بھی نہیں ہے کہ زندگی صرف مسکرانے کا نام ہے اوروں کی طرح اس باپ بیٹے نے بھی زندگی کے مختلف رنگ دیکھے ہیں زندگی کی رونقوں اور رعنا ئیوں  کے ساتھ  ساتھ اس کی مشکلات اور چیلنجوں کا ذائقہ بھی چکھا ہے باپ نے کچھ زیادہ اور بیٹے نے کچھ کم ۔لیکن یہ کم بھی بہت بڑے بجلی کے جھٹکے کے مترادف ہے تو آپ خود اندازہ لگا لیں کہ باپ کس قدر مضبوط اعصاب کامالک اور بلند حوصلہ انسان ہے جس نے خاندان کے اندر سے لے کر دنیا بھر کے حریفوں کا مردانہ وار مقابلہ کرکے اپنا مقام نہ صرف بنایا بلکہ اسے استحکام کی بخشا ۔یہ باپ بیٹا بلاشبہ پاکستان کی پہچان بن چکے ہیں اور انکی خدمات ہیں جن کا اعتراف ہر دور میں اپنے تو اپنے ،ان کے بدترین مخالفین بھی کرنے پر مجبور نظر آئے ۔ باپ بیٹی کی کہانی سے بہت سے کردار جڑے ہوئے ہیں اس کہانی میں مشہور ڈرامے ساس بھی کبھی بہو تھی جیسی رشتے داریاں بھی ہیں حسد کی جلن بھی ہے کامیابی کا جشن بھی ہے اور کامیابی سے روکنے کی سازشیں بھی ہیں اپنوں اور غیروں کی چوٹ بھی ہے زخم بھی  ہیں رنجشیں بھی ہیں  رشک بھی ہے سبق بھی ہے ان کے گھروں پر بات جیو پاکستان ڈاٹ کام کی آئندہ رپورٹوں میں ہوگی ورنہ میں لے کر ان کی نشاندہی بھی کی جائے گی ان کی حرکتیں بھی یاد دلائی جائیں گی کچھ کا پردہ بھی رکھنا مقصود ہے آج صرف بات ہوگی جے ایس بینک اور گلوبل کی کامیابیوں کی ۔پاکستان کے تیزی سے فروغ پاتے ہوئے مالیاتی ادارے جے ایس بینک اور جے ایس بینک کے ذیلی ادارے اور پاکستان کی فلیکشپ ایکوٹی بروکریج اور انویسٹمنٹ کمپنی جے ایس گلوبل کیپیٹل لمیٹڈ (یہ ایس جی سی ایل )کو متعدد قومی اور  بین الاقوامی  فورا اس پر اپنی کارکردگی کی بنا پر تسلیم کیا جا چکا ہے ۔جے ایس بینک نے ایشین بینکنگ اینڈ فنانس ایوارڈز 2019 میں پاکستان کے درمیانے حجم کے بہترین ریٹیل بینک پاکستان کی بہترین کنزیومر فنانس پروڈکٹ اور پاکستان کے بہترین ایس ایم ای بینک ایوارڈ حاصل کیے ۔ویسٹ بینک فار سمال میڈیم انٹرپرائزز (ایس ایم ای )ایشیا منی ایوارڈ 2019 میں ملا جبکہ اس کی ڈیجیٹل ٹریفک  انشی ایٹو کے لیے بیسٹ پے منٹ ٹیکنالوجی سلوشن پرووائڈر کا ایوارڈ 2019 ڈی جیDIGI ایوارڈ میں دیا گیا ۔جے ایس بینک کے صدر اور سی ای او بصیر شمسی کے مطابق یہاں صرف ہمارے لیے بلکہ پوری پاکستانی مالیاتی صنعت کے لیے بڑی کامیابی ہے اور یہ اعزاز اس بات کا عکاس ہے کہ ہماری صنعت نہ صرف اعلی کارکردگی کے بین الاقوامی معیارات کو پورا کر سکتی ہے بلکہ اس سے تجاوز کر سکتی ہے ہم ان قیمتی فورمز پر ستائشوں سے خوش ہیں اور ہم آسان اور سستی مصنوعات متعارف کرانے اور تیار کرنے کا سلسلہ جاری رکھیں گے جو ہمارے صارفین کی زندگیوں کے لیے اہمیت کی حامل ہو دوسری جانب جے ایس بینک کے ذیلی ادارے جے ایس گلوبل نے بھی چارٹرڈ فائنانشل اینا لسٹ (سی ایف اے )سوسائٹی پاکستان کے زیر اہتمام16 و یں سالانہ ایکسیلینس ایوارڈ تقریب میں بیسٹ ایکویٹی بروکریج ہاؤس ۔بیسٹ اکنامک ریسرچ ہاؤس ،بیسٹ ٹرانزیکشن کیٹگری میں پانچ ایوارڈ جیتے تقریب کے دوران جے ایس گلوبل کے سی ای او کامران ناصر نے کہا کہ سی ایف اے ایوارڈ کی تاریخ میں پہلے ایسا کبھی نہیں ہوا کہ کسی ایک بروکریج فاروق نے ایک ہی مرحلے میں بہت سے ایوارڈز جیتے ہو انہوں نے صنعتی رہنماؤں اور مارکیٹ میں اعتماد قائم کرنے کے لیے اس طرح کے اقدامات پر سی ایف اے ایسوسی ایشن کی کاوشوں کو زبردست خراج تحسین پیش کیا ۔یہ حقیقت ہے کہ قومی مالیاتی صنعت میں ترقی اور خوشحالی کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کیلئے پرعزم جے ایس بینک اور جی ایس گلوبل اپنے صارفین کی زندگیوں کو سادہ اور آسان بنانے کے لیے تیار کی گئی جدید اور قابل قدر مالیاتی مصنوعات اور خدمات کی فراہمی کے ذریعے اپنا سفر جاری رکھے ہوئے ہیں ۔