ایف آئی اے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ نمرتا اپنےگھر والوں سے بہت کم رابطےمیں تھی جبکہ اس کا مہران ابڑو سے بہت زیادہ ٹیلی فونک رابطہ تھا ۔

نمرتا ہلاکت کیس میں ایف آئی اے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ نمرتا اپنےگھر والوں سے بہت کم رابطےمیں تھی جبکہ اس کا مہران ابڑو سے بہت زیادہ ٹیلی فونک رابطہ تھا ۔
لاڑکانہ کےآصفہ میڈیکل کالج کےہاسٹل روم میں مردہ پائی گئی فائنل ایئرکی طالبہ نمرتا کی ہلاکت سے متعلق لیاقت یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسز جامشورو کے بعد ایف آئی اے سائبرونگ نےبھی اپنی رپورٹ پولیس کوبھیج دی 
رپورٹ میں نمرتا اور اس کے دوست مہران ابڑو ، علی شان کے رابطوں کی تفصیلات فراہم کر دی گئیں ہیں، موبائل ریکارڈکے مطابق نمرتا اور مہران ابڑو کے درمیان 4 ہزار بار کال اور ٹیکسٹ میسج کے ذریعے رابطہ رہا، جبکہ اس کا آخری بار 15 ستمبر کو مہران ابڑو سے رابطہ ہوا تھا۔
ستمبر میں نمرتا نے صرف ایک بار اپنے بھائی ڈاکٹر وشال سےبات کی تھی، نمرتا نے والد سے بھی ایک بار اور والدہ سے 4بار بات کی تھی۔
ایف آئی اے کی رپورٹ عدالت میں پیش کردی گئی ہے، جبکہ عدالتی تحقیقات میں مزید5 طالبات کےبیانات قلمبند کر لئے گئے ہیں۔
واضح رہے کہ آصفہ ڈینٹل کالج کی فائنل ایئرکی طالبہ ڈاکٹر نمرتا کی پھندہ لگی لاش 16 ستمبر کوہاسٹل کےکمرے میں پائی گئی تھی۔



اپنا تبصرہ بھیجیں