چونکا دینے والی میگا سیریل ’’کہیں دیپ جلے‘‘

چونکا دینے والی میگا سیریل ’’کہیں دیپ جلے‘‘
پاکستانی ٹی وی ڈرامے نہ صرف ملک بلکہ بیرونِ ملک بھی مقبول ہورہے ہیں، خصوصاًپاکستان کے سب سے مقبول انٹرٹینمنٹ چینل ’’جیو ٹی وی‘‘ نے گزشتہ چند برس میں ایک سے بڑھ کر ایک سیریل پیش کیے، جنہیں بے حد پذیرائی ملی، ان میں خانی، رومیو ویڈز ہیر، میرا رَب وارث، ڈر خدا سے، خدا اور محبت، اب دیکھ خدا کیا کرتا ہے، میرا خدا جانے، خلش، ایک تھی رانیہ، گھر تتلی کا پر، تم سے ہی تعلق ہے، بابا جانی وغیرہ شامل ہیں، جنہوں نے ناظرین کے دِلوں میں گھر کیے، اِن کی کہانیاں آج بھی ہر چھوٹے بڑے کے ذہن پر نقش ہیں۔ 
کامیڈی، طنز و مزاح، رومانس، سنجیدگی، ہنسی، مذاق، قہقہے، جوش، جذبات، خوف ، احساسات، انتقام اور دِل چھو لینے والے مختلف موضوعات پر مبنی سیریل ایک جانب ناظرین کی توجہ کا مرکز بنے، دوسری جانب حساس موضوعات پر بنائے گئے سیریلز نشر ہوئے، تو ڈراموں کی کئی کہانیوں میں خاندانی روایات کو بھی انتہائی خوب صورتی سے اُجاگر کیا گیا ۔ کچھ سیریلز میں سماجی مسائل کی نشاندہی کی گئی تو کچھ کو دیکھ کر ناظرین اپنی ہنسی نہ روک پائے۔ 
روٹھنے اور منانے کی کیفیات، فیملی ڈراما، تجسس، رشتوں کی طاقت، رسم و رواج سے بغاوت اور ایسے کئی منفرد موضوعات کے مختلف رنگ ’’جیو‘‘ کی اسکرین پر جگمگاتے رہے۔ جیو ٹی وی نے اپنے مقبول ڈراموں کی کہکشاں کے سبب سوشل میڈیا پر بھی لاکھوں ہٹس حاصل کیے، جس میں وقت کے ساتھ مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ 
معروف پروڈیوسرز عبداللہ کادوانی اور اسد قریشی پاکستان کی انٹرٹینمنٹ انڈسٹری میں ایک مضبوط ستون کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اِن کے ادارے ’’سیونتھ اسکائی انٹرٹینمنٹ‘‘ کے تحت بننے والے ڈراموں کے منفرد اور اچھوتے موضوعات بھی نا صرف ناظرین کا دِل جیت لیتے ہیں بلکہ ٹیلی ویژن انڈسٹری کی ریٹنگ چارٹ پر بھی اپنی برتری قائم کرتے ہیں ۔ 
رواں ماہ سے سیونتھ اسکائی انٹرٹینمنٹ کی نئی ڈراماسیریلز ’’جیو ٹی وی‘‘ پر شروع ہوگئی ہیں اور کچھ شان دار سیریلز کامیابیاں سمیٹ کر اختتام پذیر ہوگئی ہیں۔ ناظرین کی دل چسپی کو مدِ نظر رکھتے ہوئے اس بار بھی نئی سہ ماہی میں کچھ ایسے ڈرامے پیش کیے جارہے ہیں، جو پہلی قسط سے چھاگئے۔ 
اُمید ہے کہ جیو ٹی وی چینل کے نئے سیریلز اپنے منفرد اور اچھوتے موضوعات، بہترین اداکاری، شان دار ڈائریکشن اور خوب صورت تحریر کے سبب سابقہ ڈراموں کی طرح ایک بار پھر مقبولیت اور ریٹنگ کے میدان میں سب سے آگے نکل جائیں گے۔ ان میں ’’ کہیں دیپ جلے ‘‘ ، ’’دل گمشدہ‘‘ اور’’ الف‘‘ قابل ذکر ہیں ان سیریل کی مختصر کہانی اور کاسٹ کے بارے میں مختصرا نذر قارئین ہے۔
عبداللہ کادوانی اور اسد قریشی کے سیونتھ اسکائی انٹرٹینمنٹ کی نئی ڈراما سیریل ’’کہیں دیپ جلے‘‘ کی ابتدائی جھلک اور پروموشن کے نشر ہونے کے بعد سے ناظرین کی بڑھنے والی بے تابی گزشتہ ہفتے ختم ہوگئی، جب اس کا آغاز ’’جیو ٹی وی‘‘ پر ہوا ۔ ’’کہیں دیپ جلے‘‘ جمعرات کی شب ناظرین کو بہترین تفریح کے ساتھ پیش کیا جارہا ہے-
ناظرین کے دِلوں پر ’’بھولا‘‘ اور ’’اُلفت‘‘ کے کرداروں میں اپنی اداکاری کے نقش چھوڑنے والے اداکار عمران اشرف اور نیلم منیر کو پروڈیوسرز عبداللہ کادوانی اور اسد قریشی اس سیریل میں ایک ساتھ لائے ہیں۔ 
دونوں کی جوڑی خوب پسند کی جارہی ہے۔اس سیریل میں سوچنے اور سمجھنے کے لیے بہت کچھ ہے۔ ایک ہنستی بستی زندگی گزارنے والی عورت شادی کے بعد مرد کے سخت رویے کو کس کس طرح سے سہتی ہے اور اُسے بدلنے کی کتنی کوشش کرتی ہے، درد میں خوشی تلاش کرنے کا منظر ایک عورت ہی بہترین تصور کرتی ہے۔ اس کا اندازہ ناظرین کو سیریل کی چندقسطیں دیکھ کر بہ خوبی ہوجائے گا۔
قیصرہ حیات کی تحریر کو صائمہ وسیم کی ہدایات میں عکس بند کیا ہے۔ ساحر علی بگا کی سُریلی آواز میں تخلیق کیا گیا ڈرامے کا او ایس ٹی بھی کانوں میں رَس گھول رہا ہے۔  ڈرامے کے مرکزی کرداروں میں نیلم منیر اور عمران اشرف کے علاوہ صبا فیصل، صبا حمید، ندا ممتاز، ہاشم بٹ، علی عباس ، حماد فاروقی، نازش جہانگیر، مدیحہ رضوی، حسن نعمان، سیدہ آریز ، بینا چوہدری، علی انصاری، سلمیٰ شاہین، شہزاد مختار اور فرح ندیم شامل ہیں