ٹیکس سے بچنے کا کوئی کیس نیب کے پاس نہیں ہو گا

قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کہتے ہیں کہ پاناما کے باقی کیسز بھی چل رہے ہیں، پاناما کیس میں جس کی معلومات جلدی آگئیں اس پر جلد فیصلہ کیا گیا۔
لاہور میں منعقدہ تقریب میں تاجروں اور کاروباری شخصیات سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا کہ یقین دلاتا ہوں کہ ٹیکس سے بچنے کا کوئی کیس نیب کے پاس نہیں ہو گا، سزا اور جزا ملکی قانون کے تحت عدالتوں کا کام ہے، ٹیکس چوری کا کوئی کیس نیب کے پاس نہیں ہو گا۔
انہوں نے کہا کہ ٹیکس سے بچنا اور منی لانڈرنگ مختلف معاملات ہیں، ٹیکس چوری اور منی لانڈرنگ میں فرق ہے، منی لانڈرنگ اور بزنس میں بھی فرق ہے، منی لانڈرنگ جرم ہے، تاجروں کے ٹیکس سےمتعلق کیسز ایف بی آرکےسپرد کریں گے، نیب خود اپنے احتساب کے لیے سامنے ہے، نیب اپنے دائرہ کار سے نکل کر کوئی اقدام نہیں کرتا۔