فیڈریشن پر قبضے کی سازش ناکام- ایس ایم منیر اور افتخار علی ملک نے یو بی جی کو ٹوٹنے سے بچا لیا –

یو بی جی کے مخالفین الیکشن قریب آتے ہی برساتی مینڈکوں کی طرح اچھلنے لگتے ہیں اور فیڈریشن پر اپنا قبضہ جمانے کے لیے ہر مرتبہ کسی بھی حد تک گر جانے کو تیار نظر آتے ہیں ماضی میں بھی ان کے اوچھے ہتھکنڈے ملک بھر کی تاجر برادری نے نا  کام بنائے اور آج بھی ایسا ہی منظر سامنے ہے  لیکن فیڈریشن کے اندرونی معاملات پر گہری نظر رکھنے اور اندرونی سیاست سے واقف حال ذرائع کا کہنا ہے کہ اس مرتبہ یو بی جی کے ازلی دشمنوں اور ظاہری مخالفین کے ساتھ ساتھ کچھ آستین کے سانپ نما چھپے حاسدوں نے گہری اور گھناؤنی سازش تیار کر لی تھی ایس ایم منیر بھائی جان کی کچھ عرصے سے بیرون ملک بغرض علاج اور آرام اور مصروفیات اور عدم موجودگی میں بعض بالشتیے یہ سمجھ بیٹھے تھے کہ انہوں نے کافی قدکاٹ نکال لیا ہے اور انہوں نے اپنے سے بڑے جوتے میں  صرف پاؤں نہیں ڈالے بلکہ سربھی ڈال دیا اور وہ اس خام خیالی میں تھے کہ  فیڈریشن کی سیاست میں گھس بیٹھیے بن کر بڑے بول پلٹ سکتے ہیں  اور آنے والے وقت میں مکمل طور پر قبضہ بھی جمع سکتے ہیں لیکن انہیں بالکل بھی اندازہ نہیں تھا کہ نیوٹن لا کے مطابق ان کی اس حرکت کا جواب اتنی ہی قوت اور رفتار سے آئے گا اور وہ آسمان سے زمین پر ایسے ان سے منہ گریں گے کہ انکے اپنے گھر والے بھی ان کا ساتھ چھوڑ جائیں گے ۔نتیجہ یہی نکلا کہ یو بی جی نے صرف ایک الیکشن کے لئے نہیں بلکہ اگلے تین سال کے الیکشن کے لیے صدارتی امیدواروں کا اعلان کر دیا ۔بزنس حلقوں نے ایس ایم منیر بھائی جان اور افتخار علی ملک کے  اس بروقت اور دوراندیش ایک نظام اور فیصلے کو سراہا ہے جس میں یو بی جی کی قیادت نے 2020 سے لے کر 2022 تک تین سال کے لیے بالترتیب ڈاکٹر نعمان بٹ ۔خالد تواب اور سہیل الطاف کو نامزد کر دیا ہے اور یہ اعلان بھی کیا ہے کہ یہ تینوں صدارتی امیدوار حکومت کو تین سالہ معاشی پلان بھی مرتب کرکے دیں گے اس بہترین ایک موضع ملی اور شاندار اعلان کے بعد یو بی جی کے مخالفین کے غبارے سے ہوا نکل گئی ہے اور برساتی مینڈک اپنی موت آپ مر گئے ہیں ۔
jeeveypakistan.com