مہران اسپا ئس اینڈ فوڈ انڈسٹریز—-بلندی سے پستی کا سفر

مہران فوڈ ز کو عوام کا اعتماد اور مصنوعات کی فروخت میں اضافے کے لئے انعامات کا لالچ اور لکی ڈرا پر  انحصار کیوں کرنا پڑا ؟
مہران فوڈز پاکستان کا ایک جانا پہچانا ادارہ ہے پاکستان کی شان اور پہچان ہے دنیا بھر میں اپنے معیار اور ذائقے کی بدولت منفرد مقام کا حامل ہے مگر فوڈ مارکیٹ میں یہ سوال اٹھایا جا رہا ہے کہ آخر مہران فوڈز کو اپنے صارفین اور عوام کو قیمتی پرکشش انعامات کا لالچ دینے اور لکی ڈرا کرنے کی ضرورت کیوں پیش آگئی ؟کہ کیا عوام میں مہران فورس کے مصالحہ جات اور روایتی مصنوعات کی مقبولیت اور پذیرائی میں کوئی کمی واقع ہو رہی ہے یا سیلز میں مطلوبہ اہداف کا حصول مشکلات سے دوچار ہوچکا ہے ؟ مہران اسپائس اینڈ فوڈ انڈسٹریز کی بانی انتظامیہ کو کبھی مارکیٹ کے درپیش چیلنجوں سے گھبراہٹ کا سامنا نہیں تھا اور نہ ہی اسے کبھی اپنی مصنوعات کی مانگ بڑھانے یا معیار برقرار رکھنے کے لئے عوامی اعتماد کی کمی کا سامنا کرنا پڑا اسی لیے انہوں نے انعامی اسکیموں کو متعارف کرانے سے گریز کیا کیونکہ مارکیٹ میں ایک پختہ تاثر یہ ہے کہ جن مصنوعات اور کمپنیوں کی اسحاق اور کوالٹی پر صارفین کو تحفظات اور خدشات ہوتے ہیں وہی کمپنیاں اپنی مصنوعات کے لیے پرکشش انعامات کا لالچ دیتی ہیں اور اپنی سیل بڑھاتی ہیں ۔ اب مہران اسپائس اینڈ فوڈ انڈسٹریز کو ایسا کرنے کی ضرورت پیش آ رہی ہے تو اس کا بہتر جواب تو کمپنی کی سیلز مارکیٹنگ ٹیم ہی دے سکتی ہے کہ آخر ایسی نوبت کیوں آئی ۔اسی سیلز اینڈ مارکیٹنگ ٹیم نے گزشتہ دنوں اپنے ہیڈآفس کی فیکٹری میں ایک تقریب منعقد کرائی اور وہاں چیئرمین گل محمد لاٹ سمیت ایگزیکٹیو ڈائریکٹرز شوبا سیلز مارکیٹنگ کے سربراہان برانڈ ٹیم ایجنسی پارٹنرز میڈیا پارٹنر اور معزز مہمانوں کو بھی بلا لیا اور وہاں دعوی کیا کہ یہ مہم بہت کامیاب اور مقبول ہو رہی ہے جس کے تحت موبائل بیلنس کلب  ریوارڈز اور دیگر انعامات دیے گئے کل 53 خصوصی انعامات تقسیم کئے گئے ۔مارکیٹ صورتحال پر گہری نظر رکھنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ جب کوئی کمپنی یا ادارہ اپنی مصنوعات کی فروخت برقرار رکھنے یا اسے فروغ دینے کے لیے عوامی صارفین کو پرکشش قیمتی انعامات دینے کیا اعلان کرے یا انعامی اسکیموں کے راستے پر چل پڑے تو یہ زیادہ خوشی کی بات نہیں ہوتی بلکہ ادارے کی انتظامیہ کے لیے خطرے کی گھنٹی سمجھی جاتی ہے کیونکہ اس کی مارکیٹنگ اینڈ سیلز ٹیم صارفین کو اپنی کمپنی کی مصنوعات کے معیار اور کوالٹی اسٹینڈرز سے مطمئن نہیں کر پا رہی ہوتی اسی لیے صارفین کو اپنے ساتھ جوڑے رکھنے کے لیے قیمتی انعامات کا لالچ دیتی ہے درحقیقت یہ سلسلہ کسی بھی ادارے اور کمپنی کی بلندی سے پستی کے سفر کا آغاز ہوتا ہے