ذوالفقار علی بھٹو کے لئے موت کی کال کوٹھڑی میں اخبارات اور ریڈیو کی سہولت ختم کر دی گئی تو……

ذوالفقار علی بھٹو کے لئے موت کی کال کوٹھڑی میں اخبارات اور ریڈیو کی سہولت ختم کر دی گئی تو وہ جیل کے عملے سے باہر کی دنیا کے بارے میں خبریں لیتے تھے۔ آخری دنوں میں جب جیل کا کوئی اہلکار علی الصبح ان کے پاس جاتا تھا تو وہ سب سے پہلے یہ سوال کرتے تھے کہ کیا سوویت یونین کی افواج افغانستان میں داخل ہو چکی ہیں؟ یہ بات اعلیٰ حکام کو بتائی گئی کہ بھٹو صاحب روز یہ سوال کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ افغانستان میں سوویت یونین (موجودہ روس) کی فوجیں داخل ہونے والی ہیں۔ امریکہ بھی میدان میں کودیگا، افغانستان میں ایک بڑی جنگ کا آغاز ہو رہا ہے۔ اسلئے میری منتخب حکومت کا تختہ الٹا گیا اور ضیاء الحق کو اقتدار میں لاکر پاکستان کو اس جنگ میں جھونکنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پاکستان کے اعلیٰ حکام بھٹو صاحب کی یہ بات سن کر ہنستے تھے اور کہتےتھے کہ موت کے خوف نے بھٹو صاحب کے ذہن پر بہت اثرات ڈالے ہیں۔ پھر دنیا نے دیکھا کہ 25دسمبر 1979ء کو سوویت افواج افغانستان میں داخل ہوئیں۔ اس کے بعد وہی ہوا، جس کی بھٹو صاحب نے پیش گوئی کی تھی۔