یونیورسٹیز اینڈ بورڈ کے صوبائی مشیر نثار کھوڑو کی صدارت میں سندھ کے چیئرمین بورڈز کا اجلاس

 اجلاس میں سیکریٹری یونیورسٹیز اینڈ بورڈز ریاض الدین، انٹر اور میٹرک بورڈز کے چیئرمین کی شرکت۔  اجلاس میں بورڈز کے امتحانات میں کاپی کلچر کے خاتمے کے لئے سینٹرز پر وجیلنس بڑھانے اور سینٹرز کا تعداد کم کرنے کا فیصلہ۔  اجلاس میں نثار کھوڑو نے کہا کہ میں امتحانات میں کاپی کلچر کو کسی صورت برداشت نہیں کروں گا۔   کاپی کلچر سے پڑھنے والے طلبہ و طالبات اور میرٹ کی حق تلفی ہوتی ہے ۔  سندھ نے علم و ادب سمیت ہر میدان میں بڑے نام پیدا کئے ہیں۔  سندھ سے ان قابل نوجوانوں کا آگے بڑھنے کا سلسہ مزید بڑھنا چاہیئے۔


 اس لئے میرٹ ہوگی تو ٹیلنٹ کی اھمیت بڑھے گی۔  جو نوجوان کاپی پر منحصر کر رہے ہیں وہ اصل خود کو آگے بڑھنے کے مقابلے سے دور کر رہے ہیں۔  قابلیت کی پوری دنیا میں اہمیت ہے۔   سندھ حکومت کاپی کلچر کا خاتمہ کرکے نوجوانون کو بہتر مستقبل فراہم کرنے اور آگے بڑھنے کے لئے پلیٹ فارم فراہم کر رہی ہے۔   امتحانات میں کاپی کلچر کی روک تھام کے لئے وجیلنس اور مانیٹرنگ سسٹم کو مزید تیز کیا جائے گا۔ امتحانات کے دوران سینٹرز کی تعداد کم کرنے پر غور کر رہے ہیں تاکے وجیلنس اور مانیٹرنگ بہتر ہو اور کاپی کلچر کا خاتمہ ہوسکے۔