سول اسپتال سے ملحقہ 6 ارب روپے کی لاگت سے تعمیر کیا جانیوالا ٹراما سینٹر مریضوں کو مفت علاج و معالجہ کی سہولتیں فراہم کرنیوالا سب سے بڑا طبی ادارہ بن گیا

کراچی  :  سندھ حکومت کی جانب سے سول اسپتال سے ملحقہ 6 ارب روپے کی لاگت سے تعمیر کیا جانے والا ٹراما سینٹر مریضوں کو مفت علاج و معالجہ کی سہولتیں فراہم کرنے والا سب سے بڑا طبی ادارہ بن گیا۔ سول اسپتال میں شہید بینظیر بھٹو ایکسیڈنٹ اینڈ ایمرجنسی ٹراما سینٹر کو پیپلز پارٹی قیادت کی خصوصی ہدایات پر جدید سہولتوں سے آراستہ کیا گیا جہاں یومیہ بنیادوں پر سیکڑوں مریضوں کو مفت علاج کی سہولتیں میسر ہیں۔ تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت کی جانب سے سول اسپتال میں قائم کردہ بینظیر بھٹو حادثات و ایمرجنسی سینٹر آپریشنل ہونے کے باعث شہریوں کے لئے مفت علاج و معالجہ کا ایک بڑا طبی مرکز بن گیا ہے جہاں حادثات کا شکار درجنوں مریضوں کے روزانہ آپریشن کئے جاتے ہیں اور سیکڑوں مریضوں کا مفت علاج کیا جائے ہے۔




ٹراما سینٹر میں مریضوں کو طبی سہولتوں کی خدمات کو مزید بہتر بنانے کے لئے سول اسپتال کی سابقہ اے ایم ایس ڈاکٹر یاسمین کھرل کو ایگزیکٹیو ڈائریکٹر مقرر کئے جانے کی اطلاعات پر ڈاکٹروں و عملے میں خوشی کی لہر دوڑ گئی۔ ذرائع کے مطابق سول اسپتال کی سابقہ اے ایم ایس سینئر ڈاکٹر یاسمین کھرل انتظامی امور اور مینجمنٹ کا وسیع تجربہ رکھتی ہیں ذرائع کے مطابق بینظیر بھٹو ٹراما سینٹر میں سینئر ڈاکٹر یاسمین کھرل کی تعیناتی کا پیرا میڈیکل کی مختلف تنظےموں‘ ڈاکٹروں اور طبی عملے نے خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ایک بہترین منتظم کی تعیناتی سے مریضوں کو بہترین طبی خدمات میسر آئیں گی۔ واضح رہے کہ سول اسپتال میں قائم بینظیر بھٹو حادثات و ایمرجنسی سینٹر واحد طبی مرکز ہے جہاں چوبیس گھنٹے مریضوں کو بہترین طبی سہولتوں کی فراہمی کا سلسلہ جاری ہے۔ ذرائع کے مطابق سابقہ اے ایم ایس سول اسپتال سینئر ڈاکٹر یاسمین کھرل کی بطور ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ٹراما سینٹر کی تعیناتی کا اعلان آج متوقع ہے۔