کراچی میں ٹرانسپورٹ کا مسئلہ بہت اہم ہے سندھ حکومت کراچی میں بھی نئی بسیں لارہی ہے : وزیر ٹرانسپورٹ اویس قادر شاہ

کراچی :  سندھ کے وزیر ٹرانسپورٹ اویس قادر شاہ نے کہا ہے کہ لاڑکانہ میں نئی بسیں آناشروع ہوئی ہیں دیگر اضلاع میں بھی بسیں بہت جلد آجائیں گی ، کراچی میں ٹرانسپورٹ کا مسئلہ بہت اہم ہے سندھ حکومت کراچی میں بھی نئی بسیں لارہی ہے۔انہوں نے یہ بات بدھ کوسندھ اسمبلی میں محکمہ ٹرانسپورٹ سے متعلق ارکان کے مختلف تحریری اور ضمنی سوالوں کا جواب دیتے ہوئے بتائی ۔ایم ایم اے کے رکن سید عبدالرشید کے بھرتیوں سے متعلق سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ایک سال میں کوئی نئی بھرتی نہیں کی گئی ہے۔




کراچی میں ٹرانسپورٹ کے مسئلے پر پوچھے جانے والے ایک سوال پر وزیر ٹرانسپورٹ کا کہنا تھا کہ محکمے کے پاس اپنا اتنا بجٹ نہیں کہ وہ خود بسیں چلاسکے ،ایک پرائیویٹ کمپنی سے معاہدہ ہوا ہے ستمبر کے اختتام پر پچاس سے سو بسوں کا آغاز ہوجائے گا۔پی ٹی آئی کے رکن خرم شیر زمان نے کہا کہ گزشتہ دس سالوں میں دس بسیں شروع ہوئی تھیں وہ بھی بند ہوگئی ہیں،حکومت اپنی ناکامیوں کا اعتراف کرنے کے بجائے بات ہنسی مذاق میں اڑادیتی ہے۔جس پر وزیر ٹرانسپورٹ نے کہا کہ اگرمیری ہنسی سے کسی کو تکلیف ہوتی ہے تو نہیں ہنسیں گے۔




اویس قادرشاہ نے کہا کہ میں پہلے بھی بتا چکا ہوں کہ فنڈز نہیں ہیں مگر جب میں نے وزارت سنبھالی تو کام شروع ہوچکا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کئی اراکین مدد کررہے ہیں اور اس معاملے پر تنقید نہیں کرنی چاہیئے ۔ جی ڈی اے کی خاتون رکن نصرت سحرنے کہا کہ وزیر صاحب کے ہنسنے پر اعتراض نہیں مگر جو حالات ہیں واقعی ہنسی آرہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر ٹرانسپورٹ کہہ رہے ہیں کام کررہا ہوں لیکن جب تک وہ اپنا کام مکمل کریں گے تب تک وزارت بھی انکے پاس رہے گی یا نہیں ؟نصرت سحر کے ان ریمارکس پر اسپیکر نے انہیں ٹوکا اور کہا کہ آپ وزارتیں لینے کی باتیں نہ کریں اور صرف اپنا سوال کریں۔نصرت سحر عباسی نے کہا کہ سر لگتا ہے پھر بریکنگ نیوز ملے گی کہ اویس قادر شاہ سے وزارت واپس لے لی گئی ۔