اگر آپ فلیٹ بنگلہ یا جائیداد خریدنے جا رہے ہیں تو یاد رکھیے عام طور پر بلڈر کیا چھپاتا ہے اور کیا دکھاتا ہے ؟

اگر آپ فلیٹ بنگلہ یا جائیداد خریدنے جارہے ہیں تو آپ کو کن باتوں کا ضروری طور پر دھیان رکھنا چاہیے اور یہ بات ذہن نشین رکھنی چاہیے کہ بلڈر اور ڈویلپر عام طور پر کیا چیز چھپاتا ہے اور کیا باتیں بتاتا ہے اور آپ کیا دکھاتا ہے ؟یہ بات ہر شخص جانتا ہے کہ عام طور پر ڈویلپر اپنے منصوبے کی صرف خوبیاں بیان کرتے ہیں اور ایسی باتیں بتاتے ہیں جوآپ کو  پرکشش لگیں اور ایسی باتوں کی طرف آپ کا دھیان جانے سے روکتا ہے جو آپ کو اور بہت کچھ سوچنے پر مجبور کر سکتی ہو ں ۔وہ آپ کو صرف سہولتیں گنواتا ہے تاکہ آپ کا من لگ جائے ۔مثال کے طور پر وہ آپ سے کہے گا کہ اس کے پروجیکٹ میں شاہانہ طرز زندگی ۔فائیواسٹار سہولیات کے ساتھ ساتھ وہ سکون پرآسائش رہائش ۔ڈیزائنر اپارٹمنٹس ۔یاد رکھئے ویلیو پراپرٹی کی بڑھتی ہے پیسے کی نہیں ۔اس طرح کے جملے استعمال کرکے دراصل وہ آپ کے جذبات سے کھیلتا ہے ۔پاکستان کے مختلف شہروں میں آج کل جو پروجیکٹس تعمیر کیے جا رہے ہیں ان میں آپ کو اپنی جانب کھینچنے کے لیے جن خصوصیات کا بطور خاص ذکر کیا جاتا ہے ان میں یہ باتیں نمایاں ہیں ۔فول پروف سیکیورٹی سی سی ٹی وی کیمرے ۔اسٹینڈبائی جنریٹر ۔تیز رفتار کشادہ لفٹ ۔بچوں کے لئے پلے ایریا ۔نماز کی جگہ ۔پارکنگ ۔سینما ۔فوڈ کورٹ ۔فائر فائٹنگ سسٹم ۔کمیونٹی سینٹر ھال ۔خوبصورت ٹائل باتھ روم ۔دلکش کچن ۔ڈیلیکس بیڈرومز ۔بکنگ صرف10فیصد اس کے بعد نہانا اور سہ ماہی ادائیگی آسان ۔ اس کے علاوہ کراچی لاہور اسلام آباد سمیت دیگر بڑے شہروں میں جو ہاؤسنگ اسکیم متعارف کرائی جارہی ہیں ان میں آپ کو سرمایہ کاری کرنے کے لئے جو ترغیبات دی جارہی ہیں ان میں بتایا جاتا ہے کہ متعلقہ سرکاری ادارے اور اتھارٹی سے باقاعدہ منظورشدہ اسکیم ہے ۔این او سی نمبر نمایاں ہے ۔ہاؤسنگ اسکیم میں 80- 120 اور 240 اور400 کے رہائشی اور کمرشل پلاٹس دستیاب ہیں ۔ہاؤسنگ اسکیم میں اپنا سینما فوڈ کورٹ پارکنگ گار بیج  کلیکشن سسٹم  ،سیکورٹی سسٹم ۔اسٹیڈیم مسجد گراونڈ گارڈن کمیونٹی ہال سینٹر وغیرہ ۔زندگی کی تمام صورتوں سے آراستہ محفوظ اور پر آسائش زندگی محفوظ رہائش ،منافع بخش سرمایہ کاری اور تابندہ مستقبل ۔پرائم لوکیشن پر ایک خوبصورت رہائشی اور کمرشل سکین جہاں پانی بجلی پہلے سے موجود ۔کشادہ سڑکیں پانی سولرانرجی-سسٹم ۔آ رو پلانٹس میرج ہال ۔اے لیول او لیول اسکول ۔ہیلتھ کلب کمیونٹی سنٹر ہسپتال بمع ایمبولینس سروس ۔کمرشل ایریا ۔جاگنگ ٹریک منی زو  لائبریری ۔گیٹڈ کمیونٹی ۔پختہ سڑکوں کا نیٹ ورک ۔سوئمنگ پول ۔ان سہولتوں سے آراستہ اسکیم میں انویسمنٹ کرنے پر کیا شدہ کی پر15 فیصد تک ڈسکاؤنٹ ۔ اسی طرح کثیرالمنزلہ اپارٹمنٹس کے مختلف منصوبوں میں بلڈر اور ڈویلپر آپ کو جو پرکشش پیکج فراہم کرتا ہے اس کے مطابق بتایا جاتا ہے کہ پروجیکٹ کا اپنا خوبصورت پارک ۔قدرتی ہوا روشنی محفوظ چاردیواری ۔جدید سیکورٹی وسیع و عریض ریسیپشن لوبی ۔الیکٹرونکس سیکورٹی اینٹرنس ۔تربیت یافتہ سیکیورٹی گارڈز ۔ہائی اسپیڈ لفٹ ۔جمنازیم ۔ٹک شاپ  بکنگ 10 سے 20 فیصد سے ،قبضہ اٹھارہ سے تیس ماہ میں اس کے علاوہ بلڈرز اور  ڈویلپرز آپ کو کن باتوں کی طرف مائل کرتے ہیں اور آپ کی توجہ حاصل کر کے آپ یقینی بنانے کی کوشش کرتے ہیں ۔آپ نے اکثر ایسے اشتہارات دیکھے ہوں گے یا میں کہا جاتا ہے کہ  فرنشڈ ماڈل بنگلہ اور فلیٹ معنی کے لئے تیار ۔آئے اور معائنہ کیجئے اور خود فیصلہ کیجئے ۔ دو سو اسکوائر یارڈز ۔۔۔۔۔۔۔۔ون یونٹ بینگلو ز ۔۔۔۔۔۔۔۔ 120 اسکوائر یارڈ ز کے ڈبل اسٹوری بنگلوز ۔۔۔۔۔۔۔ اسی طرح 120 اسکوائر یارڈ پروان یونٹ بنگلوز اور سنگل اسٹوری بنگلوز کے اشتہارات بھی آپ کی نظر سے گزرے ہوں گے کہ میں کہا جاتا ہے کہ  اپنے بچوں کو آلودگی کے زہر سے بچائے اور سکون اور صحت بخش فضا میں گھر بنائے ۔ شہر کے داخلی اور خارجی راستوں کی مرکزی شاہراہوں سے چند منٹ کی ڈرائیو پر ۔۔۔۔۔۔ایئرپورٹ چند منٹ کے فاصلے پر ۔۔۔۔۔۔۔آئیڈیل لوکیشن مناسب ترین قیمتی ادائیگی کا آسان شیڈول ۔۔۔۔۔۔۔زلزلہ پروف سٹرکچر ۔۔۔۔۔150 اور 200 فٹ کشادہ سڑکیں ۔۔۔۔۔مکمل پرائیویسی پرکشش ایلیویشن ۔۔۔۔۔امپورٹڈ فکسچرز ۔۔۔۔۔ترقیاتی کام تیزی سے جاری ۔۔۔۔۔آپ کے خوابوں کی تعبیر آپ کا اپنا گھر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اسی طرح اور بھی ایسی کہیں اس کی میں متعارف کرائی جاچکی ہیں جن کے پرکشش اشتہارات کے ذریعے آپ کو اپنی جانب متوجہ کیا جاتا ہے اور آپ کو کہا جاتا ہے کہ  غیر معمولی آسائشات سے آراستہ ایک حسین رہائشی منصوبہ  جو آپ کی زندگی کو حسین سے حسین تر بنائے جدید اور آسائش رہائش اپنائے اپنی زندگی بنائے ۔مختلف اسکیموں میں اب پرکشش فاؤنٹین بیڈمنٹن اور ٹینس کورٹ ۔اپنے شاپنگ کمپلیکس ۔کیفیٹیریا کی سہولتوں کو بھی نمایاں کیا جاتا ہے ۔کچھ ایسے بل ڈویلپرز بھی ہیں جو آپ کو اپنی سائیڈ پر بلاتے ہیں اور وہاں پر اپنے آفس میں مختلف قسم کے ایوارڈز سجا کر رکھتے ہیں تاکہ آپ کو معلوم کرسکیں ۔شہریوں کو بعض بلڈنگ اور ڈویلپرز کے حوالے سے مختلف شکایات اور الگ الگ تجربات کا سامنا رہا ہے ۔قومی احتساب بیورو کے پاس متعدد قافیوں سوسائٹیوں اور بلڈرز اور ڈیولپرز کے حوالے سے شکایات موجود ہیں ۔نیب نے بعض بلڈرز کو گرفتار بھی کیا ہے اور ایسے پروجیکٹس بھی ہیں جو سالہاسال سے مکمل نہیں ہوئے اور لوگوں کی رقم لے کر بلڈر مزے اڑاتے رہے ان سے رقوم کی واپسی بھی عمل میں لائی گئی ہے ۔جس طرح ہاتھوں کی پانچوں انگلیاں برابر نہیں ہوتیں اسی طرح اچھے برے لوگ ہر جگہ ہوتے ہیں اور اچھے برے لوگ بلڈرز اور ڈیولپرز میں بھی موجود ہیں ۔بلڈرز اینڈ ڈویلپرز کی ایسوسی ایشن آباد خود بھی ایسی شکایات کا جائزہ لیتی رہتی ہے اور اس کے ممبر ارکان کے خلاف اگر کوئی شکایت آئی تو اس کا فوری ایکشن ہوتا ہے ۔کراچی لاہور اسلام آباد سمیت ملک کے مختلف شہروں میں ایسے متعدد بلڈرز ڈویلپرز موجود ہیں جنہوں نے مختلف منصوبے متعارف کروائے اور وہاں پر کشش سہولتوں کا یقین دلایا بلند بانگ دعوے کیے لیکن پھر وہ دعوے اور وعدے پورے نہ ہوئے کبھی حقیقت کا روپ نہ بھر سکے اور اس میں لوگوں کی بڑی رقم  ڈوب گئی ۔بیرون ملک پاکستانیوں نے مختلف شہروں کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کی ان میں سے کچھ کی سرمایہ کاری بہت اچھی رہی لیکن ایسے بھی لوگ ہیں جن کو صرف شکایات ہیں شکایات ہیں ان کا پیسہ لوٹ لیا گیا اور ان کے ساتھ جو وعدے کیے گئے تھے وہ پورے نہیں کیے گئے ۔بلڈرز ڈویلپرز میں موجود ایسی کالی بھیڑوں نے اس شعبے میں بہت بد نام کر رکھا ہے جس کی وجہ سے اچھے تعمیراتی گروپ بھی پریشان رہتے ہیں ۔گوادر میں پلاٹوں کے الاٹمنٹ کے حوالے سے ماضی میں بہت سے اعتراضات شکایات اور مسائل نے سر اٹھایا ۔کراچی جیسے شہر میں پراپرٹی کی خریداری میں لوگوں کو اس لیے مشکلات کا سامنا ہے کہ یہاں ایک ہی پلاٹ کی کئی مرتبہ بیچا جا چکا ہے کے لئے سمیت دیگر الاٹیز کی دو سے تین اور چار چار فائلیں لوگ لے کر گھوم رہے ہیں ۔پرانی لیز کے خاتمے اور نئی لیز کے حصول یا تجدید کے اپنے مسائل ہیں ۔زرعی زمینوں کو کمرشل اور کمرشل زمینوں سے پہلے ان کے رہائشی اور صنعتی درجات کی تبدیلی کے مسائل بھی اپنی جگہ ہیں ۔بڑے شہروں میں سرکاری مالیت کچھ اور ہے کاغذی مالیت کچھ اور ہے اور پراپرٹی کی مارکیٹ ویلیو بالکل مختلف ہے یہ سب کچھ ٹیکس بچانے اور کالے دھن کو سفید کرنے کے کام آتا ہے پاکستان کی پراپرٹی مارکیٹ میں ایسے گروپ بھی شامل ہیں اور ایسی شخصیات بھی موجود ہیں جو منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں یا ان کے تانے بانے  انڈرورلڈ کے بڑے لوگوں سے ملتے ہیں ۔پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے والے بڑے گروپوں کے اب دبئی لندن اور دیگر ملکوں میں بھی پروجیکٹس موجود ہیں اور وہاں ان کا پیسہ رکھا ہوا ہے ۔پاکستان کے تحقیقاتی ادارے ایسے متعدد ناموں کے حوالے سے تحقیقات کر رہے ہیں ۔پاکستان میں روایتی فلیٹ اور اپارٹمنٹ کے مختلف پروجیکٹس کے رہائشی افراد کی جانب سے جن مسائل اور مشکلات اور پریشانیوں کی نشاندہی کی جاتی ہے ان میں ناقص اور غیر معیاری تعمیراتی کام ۔باتھ روم کچن اور الیکٹریکل ورکس میں خرابیاں اور ناقص میٹریل کا استعمال ۔غیرمعیاری لوکس دروازے کھڑکیاں ۔پائپ لائن کا ناقص مٹیریل ۔چھتوں اور باتھ روم اس کا لیکج ۔رنگ روغن کی ناقص کوالٹی ۔بعض پروجیکٹ میں روشنی اور ہوا کا کوئی گزر نہیں ۔آتش زدگی اور آگ لگنے یا دھواں بھرنے کی صورت میں ایمرجنسی ایگزیکٹ کا کوئی مناسب انتظام نہیں ۔پارکنگ کے مسائل سیکورٹی کے ایشوز ۔دیکھ بھال مرمت کا مناسب مکینزم نہ ہونا یونین کے مسائل پانی کی موٹر سے لے کر ٹینکر کی فراہمی تک جھگڑے ۔ FOR feedbackE mailjeeveypakistan@yahoo.com