بحریہ ٹاون میں بارش ۔۔۔ زحمت نہیں رحمت ہے۔ بڑوں کے ساتھ بچے بھی خوشی سے نہال۔۔۔ ادھر بارش ادھر صفاٸی پانی کہاں گیا پتہ بھی چلا۔۔۔۔

بحریہ ٹاون میں بارش ۔۔۔
زحمت نہیں رحمت ہے۔
بڑوں کے ساتھ بچے بھی خوشی سے نہال۔۔۔
ادھر بارش ادھر صفاٸی
پانی کہاں گیا پتہ بھی چلا۔۔۔۔

تحریر شاہدغزالی۔۔۔

شدید گرمی میں بارش کا شدت سے انتظار تھا کراچی میں بارش کا سلسلہ شروع ہوا تواللہ نے اس کا آغاز بحریہ ٹاون سے ہی کیا۔ بارش میں گرمی کے ستاٸے بے ساختہ گھروں سے نکل کر باہر آگٸے بچوں کا تو خوشی سے برا حال تھا وہ بارش کے پانی میں بھیگتے ہوٸے ایک دوسرے پر چھینٹے اڑاتے موج مستی میں مگن تھے ۔بارش ہلکی ہوتے ہی بحریہ کے اہلکار ہاتھوں میں واٸپرز لیے پانی نکالنے پہنچ گٸے گھر کے


پاس تھوڑا بہت جو پانی تھوڑی دیر کے لیے جمع ہوتا تو بچے اس میں اچھل کود کرتے ہیں بچوں نے ان سے اپیل کی کہ انکل ابھی پانی صاف نہ کریں ہم اس میں کھیل رہے ہیں انھوں نے کہا کہ بیٹا ہماری ڈیوٹی ہے ہم یہاں پانی جمع ہونے نہیں دے سکتے جبکہ دیگر علاقوں میں

یہ بارش کا پانی دنوں نہیں ہفتوں جمع رہتا۔ بارش کا پانی صاف ستھری گلیوں سے ہوتاہوا برساتی نالوں میں چلا جاتا ہے جو صرف بارشوں میں ہی استعمال ہوتے ہیں ۔برساتی نالوں میں کسی قسم کی گندگی نہیں ہوتی کیونکہ یہاں نکاسی کے لیے گٹر کی لاٸینیں علحیدہ ہیں
برساتی نالوں سے پانی بہہ کر بحریہ ٹاون کے بناٸے گٸے ڈیمز میں چلا جاتا ہے ۔یہی وجہ ہے کہ بحریہ میں بارش کے بعد کسی قسم کی گندگی یا پریشانی نہیں ہوتی اور یہاں کے رہاٸشی بارش کا بھرپور لطف اٹھاتے ہیں۔۔۔

===========================