پاکستان پیپلزپارٹی نے 14 اگست کو کراچی میں ریلی نکالنے کا اعلان کر دیا

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی واہڑ میں میڈیا سے گفتگو کشمیر کے مسئلے کے لئے عالمی سطح پر کوششوں کے لئے چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری اور آصف علی زرداری کی تجاویز پر عمل کرنا ہوگا۔ کشمیر مسئلے پر پوری قوم بلاتفریق متحد ہے، اس وقت وفاقی حکومت جو حرکتیں کررہی ہے وہ سمجھ سے بالاتر ہیں: وزیراعلیٰ سندھ۔ اس نازک موڑ پر پی پی رہنما فریال ٹالپور اور مریم نواز کو گرفتار کیا گیا۔ 14 آگست کو کشمیریوں سے یکجہتی کا دن منائینگے، کل پاکستان پیپلز پارٹی کراچی میں ریلی نکالے گی۔ عمران خان نیب کو اپنے فائدے کے لئے استعمال کررہے ہیں اس طرح سے ملک جو نقصان ہوگا۔ پی ٹی آئی حکومت پانچ سال پورے کرتے نظر نہیں آرہی۔ عمران خان آئین کے مطابق حکومت نہیں کررہے۔ دس مہینے میں سی سی آئی کا ایک بھی اجلاس نہیں بلایا گیا، آئین کے مطابق سی سی آء کا اجلاس ہر تین مہینے بلانا ضروری ہے۔ حالیہ بارشوں کے دوران سندھ حکومت، ضلعی انتظامیہ اور تمام متعلقہ اداروں کی کارکردگی متاثر کن رہی۔ بارشوں کی پیش گوئی سے کے بعد صوبائی کابینہ، ارکان سندھ اسمبلی اور بلدیاتی اداروں کے نمائندوں کو اپنے حلقے میں رہ کر بارشوں کی صورتحال سے نمٹنے کا ٹاسک دیا گیا تھا۔ میں نے ذاتی طور پر برساتوں کی صورتحال کو نہ صرف مانیٹر کیا ہے بلکہ برساتوں سے متاثر تمام اضلاع کے دورے بھی کئے۔ کراچی میں بارشوں کے بعد چھ سات گھنٹے کے اندر  شاہراہوں سے پانی نکالنے کا ٹاسک مکمل کیا گیا۔ کچھ لوگ گھر بیٹھے کمنٹری کررہے تھے لیکن حکومت سندھ نے بارشوں کے دوران بہترین کارکردگی دکھائی۔ پریس کے دوستوں نے بھی کہا کہ انتظامیہ اور منتخب اراکین بارشوں میں عوام کے ساتھ نظر آئے۔ حیدرآباد میں متحدہ کے میئر اور تین صوبائی اسمبلی کے اراکین نے بھی سندھ حکومت کو سراہا  متاثرین کیلئےمٹیاری، سجاول، ٹھٹھہ اور دیگر مقامات پر رلیف کیمپ قائم کئے گئے ہیں۔ بہت جلد آر اوپلانٹس بحال کئے جائیں گے، بعض آر او پلانٹس کی غیر فعالی کا سبب ادائیگیوں کا نہ ہونا ہے۔ کیا بلاول بھٹو زرداری گرفتار ہورہے ہیں: صحافی کا سوال۔ بلاول بھٹو زرداری کی گرفتار کا بہت عرصے سے سنتے آرہے ہیں: وزیراعلی سندھ ایسی باتین کرنے والون  کی کم عقلی پر حیرت اور ہنسی آتی ہے،  سابق چیف جسٹس نے بلاول بھٹو زرداری اور میرا نام جے آء ٹی اور ای سی ایل سے نکالنے کے احکامات دیئے تھے۔ صرف ای سی ایل سے نام نکالا گیا ہے۔ سابق چیف جسٹس نے کہا تھا کہ بلاول بھٹو بے قصور ہیں اور وہ اپنی ماں کا مشن آگے لے کر چل رہے ہیں۔ چیف جسٹس نے یہ بھی کہا کہ کس کی ڈکٹیشن پر آپ نے بلاول بھٹو کا نام جے آئی ٹی میں ڈالا ہے۔ وزیر اعلی سندھ ملک میں مہنگائی کا طوفان برپا ہے، مہنگائی سے توجہ ہٹانے کے لئے اپوزیشن کے خلاف کارروائیاں ہورہی ہیں۔ اقتصادی صورتحال بری ہے، گذشتہ مالی سال میں پچھلے سالوں سے کم کلیکشن ہوئی۔ ملازمین کی تنخواہیں بڑہانے سے زیادہ ان پر ٹیکس عائد کئے گئے۔ پی ٹی آئی نے کہا تھا کہ حکومت میں آتے ہیں  200  ارب ڈالر کا بندوبست کریں گے اور  100 ارب  ڈالر آئی ایم ایف کے منہ پر ماریں گے۔ دعوؤں کے برعکس حکومت میں آتے ہی آئی ایم ایف سے قرض لیا گیا،  ملک میں بہت بڑا بحران ہے جس سے نکلنا عمران نیازی کے بس کی بات نہیں:وزیراعلی سندھ