لاڑکانہ کی خبریں

لاڑکانہ۔ رپورٹ محمد عاشق پٹھان

لاڑکانہ
رپورٹ محمد عاشق پٹھان

پولیٹیکل سیکریٹری بلاول بھٹو زرداری جمیل سومرو نے کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ روز ریکارڈ توڑ الیکشن ہوئی پاکستان پیپلزپارٹی پر عوام نے اپنے اعتماد کا اظہار کیا اور لینڈ سلائیڈ کامیابی حاصل
ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاڑکانہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مزید کہنا تھا کہ الیکشن کیمشن کی جانب سے بنائی گئی ووٹر لسٹوں میں بہت تضاد تھا ووٹرز کے ووٹس کی لوکیشنز تبدیل ہوئی ٹرن آئوٹ کم ہونے کی وجہ بھی یہی تھی الیکشن کمیشن اور پرزائیڈنگ افسران کو فراہم کردہ ووٹرز لسٹیں الگ الگ تھیں انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے 14 اضلاع میں بہت بڑی کامیابی حاصل کی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور ساری پیپلزپارٹی عوام کے پیپلزپارٹی پر اعتماد کرنے پر شکر گزار ہیں اپوزیشن کو دعوت دیتا ہوں کہ جو بھی انکے نمائیندگان الیکٹ ہو کر آئے ہیں ہم انکے ساتھ کام کرنے تیار ہیں آگے آئیں اپنی تجاویز دیں الیکشنز میں معمولی نوک جھونک ہو جاتی ہے لیکن اب الیکشنز ختم ہو گئے انہوں نے مزید کہا کہ پیپلزپارٹی کے منتخب بلدیاتی نمائیندے اب عوام کی خدمت کریں گے جمعیت علماء اسلام کی اپنی مرضی ہے وہ نتائج کو مانیں یا نہ مانیں الیکشن کمیشن کی ووٹر لسٹس پر تو پیپلزپارٹی نے بھی اعتراض اٹھایا ہے

بلاول بھٹو زرداری کے 21 جون کو لاڑکانہ میں کیے گئے جلسے کا الیکشن کمیشن نے الیکشن ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا نوٹس لیتے ہوئے بلاول بھٹو کو الیکشن کمیشن طلبی کا نوٹس دے دیا

پاکستان پیپلزپارٹی کی جانب سے شھید بینظیر بھٹو کی 69 ویں سالگرہ کے موقع پر لاڑکانہ میونسپل اسٹیڈیم میں جلسہ منعقد کیا گیا تھا جس میں وزیر خاجہ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے شرکت کر کے خطاب کیا تھا تاہم الیکشن کمیشن کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر بلاول بھٹو زرداری کو 28 جون کو الیکشن کمیشن میں پیش ہونے کا حکم جاری کردیا گیا ہے اس سلسلے میں الیکشن کمیشن کے ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ افسر لاڑکانہ کاشف عنایت کا کہنا ہے کہ
21 جون کو منع کرنے کے باوجود بلاول بھٹو زرداری نے جلسے میں شرکت کی جو کہ انتخابی ضابطہ اخلاق کی سنگین خلاف ورزی ہے مقررہ تاریخ پر وہ خود یا وکیل کے ذریعے الیکشن کمیشن لاڑکانہ پیش ہوں انکا مزید کہنا تھا کہ بلاول بھٹو زرداری کی دادی کے انتقال کی وجہ سے تاخیر سے نوٹس جاری کیا گیا ہے