بہانے گھڑنے کا ایوارڈ کے الیکٹرک کے نام ، سخت گرمی میں بد ترین لوڈ شیڈنگ کے دوران امتحانات دینے والے طلباء کبھی کے الیکٹرک کو نہیں بھولیں گے


بہانے گھڑنے کا ایوارڈ کے الیکٹرک کے نام ، سخت گرمی میں بد ترین لوڈ شیڈنگ کے دوران امتحانات دینے والے طلباء کبھی کے الیکٹرک کو نہیں بھولیں گے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ سخت گرمی کے موسم میں کے الیکٹرک نے ان کی زندگی اعلانیہ اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے ذریعے اجیرن بنا رکھی ہے جب کے الیکٹرک سے صورتحال معلوم کرو تو ایسے ایسے بہانے اور جواز پیش کیے جاتے ہیں کہ عقل دنگ رہ جاتی ہے شہریوں


کا کہنا ہے کہ انتہائی خوبصورتی سے جھوٹے بہانے گھڑنے کا ایوارڈ کے الیکٹرک کو ملنا چاہیے کے الیکٹرک انتظامیہ کا کمال ہے کہ اس کے پاس ایک سے ایک جھوٹ بولنے کے ماہر لوگ موجود ہیں شہر میں گرمی ہو یا سردی بارش ہو یا نہ ہو رہی ہو ، کسی بھی صورتحال میں بجلی غائب ہو جائے تو کے الیکٹرک انتظامیہ کے پاس ریڈی میڈ بہانے موجود ہوتے ہیں اور شہریوں کو کوئی نہ کوئی لالی پاپ دے کر


وقت گزارا جاتا ہے لیکن شہری بھی کے الیکٹرک کے ہر وہ اور جھوٹے بہانوں سے بخوبی واقف ہو چکے ہیں شہر میں جگہ جگہ کے الیکٹرک کے خلاف احتجاج بڑھتا جا رہا ہے بجلی غائب ہونے کا دورانیہ بجلی آنے کے دورانیے سے بڑھ چکا ہے ۔
==========================
امتحانات کے دوران شدید گرمی میں لوڈ شیدنگ بند کی جائے، عبدالحاکم قائد

کراچی (اسٹاف رپوٹر) پاسبان ڈیموکریٹک پارٹی ڈسٹرکٹ سینٹرل کے زیر اہتمام انٹر کے امتحانات کے دوران گھنٹوں ہونے والی لوڈ شیدنگ کے خلاف مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے پی ڈی پی کے وائس چیئرمین عبدالحاکم قائد نے کہا کہ ہر دو گھنٹے بعد تین گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ قابل مزمت ہے، 9بجے مارکیٹیں، گلی محلوں کی دکانیں بند کرانے، پٹرول میں 85روپے اضافہ اور بجلی کے ظالمانہ نرخ بڑھانے کے بعد لوڈشیڈنگ کا کیا جواز ہے؟انٹر کے طلبا ء شدید گرمی کے موسم میں بنا پنکھوں کے امتحانات دینے پر مجبور ہیں،امتحان دینے کے لئے بیٹھنے کی معقول جگہ کا انتظام بھی نہیں ہے، ایک ایک ڈیسک پر دو اور تین طلباء بیٹھ کر امتحان دیتے ہوئے نظر آرہے ہیں،سندھ سمیت کراچی بھر میں تعلیم و تدریس کا نظام شدید بگاڑ کا شکار ہے، جس کی وجہ پی پی پی کی صوبائی حکومت اوربورڈ کے اہلکار و اعلی افسران ہیں،تعلیم دشمن کرپٹ سندھ حکومت نے میٹرک اور انٹر بورڈ کو تباہ کر دیا ہے، امتحانات کے دوران شدید گرمی میں لوڈ شیدنگ بند کی جائے، امتحانی مراکز میں پنکھوں اور ٹھنڈے پانی کا انتظام کیا جائے، پاسبان طلباء کے ساتھ ہونے والے ظلم پر آواز بلند کرے گی، پیپرز کے دوران لوڈ شیدنگ کی گئی تو احتجاج کریں گے
https://e.jang.com.pk/detail/166514
============================================
گلستان جوہر، بجلی کی لوڈ شیڈ نگ اور پانی کی عدم فراہمی کیخلاف احتجاج

کراچی(اسٹاف رپورٹر) بجلی کی طویل اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈ نگ اور پانی کی عدم فراہمی کے خلاف گلستان جوہر بلاک19ے مکینوں نے جوہر موڑ پر احتجاج کیا ،مظاہرین نے ٹائرجلاکر سڑک بند کردی جس کے باعث بد ترین ٹریفک جام ہو گیا اور گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں، مظاہرین نے واٹر بور ڈ انتظامیہ کے خلاف بھی نعرے لگائے ،اطلاع ملنے پر پولیس موقع پر پہنچ گئی ، مظاہرین کا کہنا تھا کہ گزشتہ3 ماہ سے پانی نہیں آ رہا ، عید الاضحٰی قریب ہےپانی فراہم کیا جائے ، بجلی کی طویل بندش نے زندگی اجیرن بنادی ہے ،مظاہرین نے الزام عائد کیا ہے کہ، واٹر بور ڈ کا عملہ مبینہ پانی فروخت کرنے میں ملوث ہے۔ پولیس نے مظاہرین کو مذاکرات کے بعد منتشر کردیا۔
https://e.jang.com.pk/detail/166503
=============================================

کراچی،تعطیل کے باوجود 16 گھنٹے تک کی لوڈشیڈنگ،شہری سڑکوں پر نکل آئے،چیف جسٹس سے نوٹس لینے کا مطالبہ

کراچی(اسٹاف رپورٹر) شہر میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا جن بے قابو ہوگیا، شہر کے کئی علاقوں میں عوام سڑکوں پر نکل آئے، لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 12سے16گھنٹے ہونے کی وجہ سے شہریوں کی زندگی اجیرن بن گئی ہے، انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے صورتحال کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے، حیرت انگیز طور پر شہر میں کئی دن سے جاری لوڈ شیڈنگ پر سیاسی جماعتوں اور منتخب نمائندوں نے خاموشی اختیار کر رکھی ہے،شہریوں کے مظاہرے میں یہ رہنما شرکت سے گریزاں نظر آ رہے ہیں، شہریوں نے میڈیا کے دفاتر فون کر کے اس بات پر سخت برہمی کا اظہار کیا ہے کہ ایم کیو ایم پاکستان نے صورتحال پر خاموشی اپنائی ہوئی ہے، اس شہر سے14سے زائد قومی اسمبلی کی نشست جیتنے والی پی ٹی آئی، پیپلز پارٹی، مسلم لیگ ن اور دیگر سیاسی جماعتیں صرف بیان بازی تک محدود ہیں۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ کاروباری مراکز ، شادی ہالوں کے نو اور دس بجے بند ہونے کے باوجود رات کو بھی لودشیڈنگ کا سلسلہ جاری رکھنا کراچی کے شہریوں کو تنگ کرنےاور موجودہ وفاقی حکومت کو بدنام کرنے کا کے الیکٹرک کی مہم کا


حصہ ہے، وزیر اعظم کراچی آکر صورتحال کا جائزہ لیں، اتوار کو ہفتے وار تعطیل کے باوجود شہر کے مختلف علاقوںلانڈھی، ملیر، کورنگی، دستگیر بلاک نو غوثیہ مسجد، النور، گلبرگ، نارتھ کراچی، بفرزون، اورنگی ٹائون، پاک کالونی، عثمانیہ سوسائٹی ناظم آباد، گلبہار وحید آباد، ملیر، عزیز آباد،گلشن اقبال پی ای سی ایچ ایس، دھوارجی سوسائٹی، برنس روڈ، گلستان جوہر،لیاقت آباد، فیڈرل بی ایریا کے مختلف بلاکوں میں طویل لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بدستور جاری رہا۔ دوسری جانب شہر کی کئی مصروف اہم شاہروں پر بھی اندھیرا چھایا رہا، اسٹریٹ لائٹ آف تھی،بعض علاقوں میں وولٹیج کم سپلائی کئے جانے کی بھی شکایا ت ہیں شہریوں کا کہنا ہے کہ کے الیکٹرک نے کراچی کی عوام کو جنگی تیاری، بلیک آوٹ میں رہنے کی عادت ڈالنے کا بیڑا اٹھا یا ہوا ہے۔
https://e.jang.com.pk/detail/166471
=========================================
ے ٹو مقررہ ڈیڈلائن پر11سو میگاواٹ بجلی قومی گرڈ کو نہیں دے سکا

اسلام آباد (حنیف خالد) قوم کو اتوار کو جو 1100میگا واٹ بجلی کراچی نیوکلیئر پاور پلانٹ ٹو (K-2) سے ملنے کا سلسلہ بحال ہونا تھا‘ وہ 8جولائی تک موخر ہو گیا ہے۔ کے ٹو نیوکلیئر پاور پلانٹ جو پیراڈائز پوائنٹ کراچی میں ایک سال سے گیارہ سو میگا واٹ بجلی نیشنل گرڈ میں فراہم کرتا چلا آ رہا تھا اسے سالانہ مرمت‘ مینٹی ننس‘ ری فیولنگ کیلئے بند کیا گیا‘ پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن کی بھرپور کوشش کے باوجود کے ٹو ایٹمی بجلی گھر میں یورینیم ایندھن کی ری فیولنگ‘ سالانہ مینٹی ننس کا کام پچیس جون تک مکمل نہ ہو سکا۔ اس طرح 26جون سے گیارہ سو میگا واٹ بجلی جو نیشنل گرڈ کو دوبارہ ملنا شروع ہونا تھی‘ وہ نہ مل سکی اور لوڈشیڈنگ میں 8جولائی تک مزید گیارہ سو میگا واٹ کا اضافہ ہو گا۔
https://e.jang.com.pk/detail/166483
=====================================================