برطانوی ریسٹورنٹ میں روبوٹس کھانا پیش کرنے لگے

برطانیہ میں افرادی قوت کی کمی کی وجہ سے معروف ریسٹورنٹ چین نے گاہکوں کو ٹیبل پر کھانا پیش کرنے کے لیے روبوٹس استعمال کرنا شروع کردیے۔

غیرملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ’’بگ ٹیبل گروپ‘‘ اپنے ایک ریسٹورنٹ میں روبوٹس کو ویٹرز کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔

چین کا تیار کردہ ’’بیلابوٹ‘‘ نامی روبوٹ بیک وقت 4 طشتریوں میں 40 کلو وزن اٹھا سکتا ہے۔

یہ روبوٹ ٹیبل تک کھانا لے جائے گا جہاں گاہک اس کے ہاتھوں سے کھانے کی پلیٹیں ٹیبل پر رکھیں گے۔

اسی طرح برتن سمیٹتے ہوئے بھی گاہک اپنی پلیٹیں روبوٹ کے ہاتھ میں تھما دیں گے۔

ایک روبوٹس کمپنی کے عہدیدار نے بتایا کہ برطانیہ میں اس قسم کے 60 روبوٹ پہلے ہی مختلف شعبوں میں استعمال کیے جا رہے ہیں۔

ان میں سے زیادہ تر ریسٹورنٹ، ہوٹل، سپر مارکیٹ، اسنوکر کلبز اور کئی دیگر جگہوں پر استعمال ہو رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ روبوٹس کی وجہ سے کاروبار کی تشہیر بھی ہوجاتی ہے کیونکہ گاہک ویڈیوز بنا کر سوشل میڈیا پر اپلوڈ کرتے ہیں۔

بگ ٹیبل گروپ کی چین میں 150 ریسٹورنٹس شامل ہیں لیکن فرنچائز کا کہنا ہے کہ فی الوقت صرف ایک ریسٹورنٹ میں روبوٹ کا تجربہ کیا جارہا ہے۔