سدھو موسے والا کا قتل، سلمان خان کی سیکیورٹی بڑھادی گئی

بھارتی معروف گلوکار شبھ دیپ سنگھ سدھو المعروف سدھو موسے والا کے قتل کے بعد ممبئی پولیس کی جانب سے سُپر اسٹار سلمان خان کی سیکیورٹی بڑھادی گئی ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق سدھو موسے والا کے قتل کے بعد گینگسٹر لارینس بشنوئی کی جانب سے سلمان خان کو بھی موت کے گھاٹ اتارے جانے کا خدشہ ہے جس کے پیشِ نظر ممبئی پولیس نے سلمان خان کی سیکیورٹی میں پہلے سے زیادہ اضافہ کر دیا ہے۔
بھارتی میڈیا سے بات کرتے ہوئے ممبئی پولیس کے ترجمان کا کہنا تھا کہ سلمان خان کے گھر اور اُن کے گرد سیکیورٹی بڑھادی گئی ہے، اس بات کو یقینی بنایا جا رہا ہے کہ سلمان خان کے گھر کے باہر کسی قسم کی کوئی مشکوک حرکت نہ ہو۔

سلمان خان کو جان سے مارنے کی دھمکی
واضح رہے کہ اس سے قبل 2018ء میں پنجابی گلوکار سدھو موسے والا کو قتل کرنے والے گینگ کے سرغنہ لارینس بشنوئی کی جانب سے سلمان خان کو جان سے مارنے کی دھمکی دی گئی تھی مگر سلمان خان اس منصوبے سے بچ نکلے تھے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق گینگسٹر لارینس بشنوئی اور سدھو موسے والا کو قتل کرنے والے گولڈی برار کا گینگ کافی منظم اور متحرک ہے، ان دونوں کے 700 سے زائد کارندے ہیں جو کہ راجستھان، ہماچل پردیش، پنجاب اور دیگر ریاستوں میں پھیلے ہوئے ہیں۔

دوسری جانب سدھو موسے والا کے قتل کے نتیجے میں ریاست پنجاب اور اترکھنڈ میں پولیس نے متعدد کارروائیوں کے دوران 8 سے زائد افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس نے واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی حاصل کرلی ہے اور تفتیش کا دائرہ بھی بڑھا دیا گیا ہے۔

سدھو موسے والا کو قتل کیوں کیا گیا؟
بھارتی میڈیا کی جانب سے دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ لارینس بشنوئی گینگ کے مطابق سدھو موسے والا نے اِن کے ایک کارندے کو قتل کروانے میں کردار ادا کیا تھا، یہ وجہ ہے کہ اُنہوں نے بدلے میں گلوکار کو قتل کیا ہے۔

لارینس بشنوئی گینگ اور سربراہ
بھارتی وہیب سائٹ ’انڈیا ٹوڈے‘ کے مطابق گلوکار کو قتل کرنے والا گولڈی برار ایک خطرناک دہشت گرد اور لارینس بشنوئی گینگ کا کارندہ ہے، گولڈی برار اور لارینس بشنوئی دونوں اس گینگ کے سربراہ ہیں۔

گینگ کا ایک سربراہ لارینس بشنوئی اس وقت بھارت کی بدنام زمانہ جیل ’تہاڑ‘ میں قید ہے۔