سٹلائٹ ٹاؤن کے علاقے نمرہ ٹاؤن میں اچانک گیارہ ہزار وولٹیج کی تاریں جھگیوں پر گر گئیں جس کے نتیجے میں ماں بیٹے سمیت دو بکریاں ہلاک جبکہ دو نوجوان زخمی ہوگئے

میرپورخاص == تحسین احمد خان === سٹلائٹ ٹاؤن کے علاقے نمرہ ٹاؤن میں اچانک گیارہ ہزار وولٹیج کی تاریں جھگیوں پر گر گئیں جس کے نتیجے میں ماں بیٹے سمیت دو بکریاں ہلاک جبکہ دو نوجوان زخمی ہوگئے واقعہ کا حکومت سندھ نے نوٹس لے لیا، چیف ایگزیکٹیو حیسکو کی جانب سے واقعہ کی انکوائری کا حکم، لائن سپریٹنڈنٹ مینٹیننس معطل جبکہ ایکسئین، ایس ڈی او اور لائن سپریٹنڈنٹ کے خلاف مقدمہ درج، حیسکو افسران کی گرفتاری کے لئے پولیس کے چھاپے،گیارہ ہزار وولٹیج کی تاریں گرنے کے چار واقعات ہو چکے ہیں تفصیلات کے مطابق سٹلائٹ ٹاؤن کے


علاقے نمر ہ ٹاؤن میں واپڈا کی گیارہ ہزار وولیٹیج کی تاریں اچانک جھگیوں پر آگریں جسکی وجہ سے آگ بھڑک اٹھی اور فوری طور پر آگ نے جھگیوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا آگ سے جھلسنے اور کرنٹ لگنے سے 50 سالہ خاتون حنیفہ اور اسکا 25 سالہ بیٹا رفیق موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے جبکہ دو نوجوان زخمی ہوئے اور دو بکریاں بھی مر گئیں مرنے والوں اور زخمیوں کو فوری طور پر سول اسپتال منتقل کیا گیا خواتین بچوں اور مردوں کی چیخ وپکار کے باعث بڑی تعداد میں لوگ جمع ہوگئے و اقع کی اطلاع ملتے ہی فائر برگیڈ موقع پر پہنچی جہاں اس نے آگ پر قابو کیا علاقہ مکینوں کے مطابق گیارہ ہزاروولٹیج کی تاریں جو کہ انتہائی کمزور تھیں اور آئے روز اسکے آس پاس سے ٹوٹ کر گر رہی تھیں لیکن واپڈا حکام کے


جانب سے ان تاروں کو بدلی کرنے کے بجائے جوڑ دیا جاتا تھا خستہ حال تاروں کی وجہ سے آج یہ واقع پیش آگیا ہے جبکہ گیارہ ہزار وولٹیج کی تاریں گرنے اور ان سے ہونے والی ہلاکتوں کے واقعہ کا چیف ایگزیکٹو آفیسرحیسکو نور احمد سومرو اور سپریٹنڈنگ انجنیئر حیسکو میرپورخاص روشن علی اوٹھو نے بھی فوری نوٹس لیتے ہوئے واقعہ کی انکوائری کا حکم دیتے ہوئے ڈائریکٹر سیفٹی حیسکو مشتاق احمد دایو کو فوری طور پر جائے وقوعہ کا معائنہ کرکے 24 گھنٹے کے اندر تفصیلی رپورٹ دینے کا حکم دے دیا.. جبکہ ایس ای حیسکو میرپورخاص سرکل روشن علی اوٹھو نے لائن سپریڈنٹ مینٹینس حیسکو سیٹ لائیٹ ٹاؤن سب ڈویژن ستار کو معطل کردیا۔اور کہا ہیکہ مکمل انکوائری رپورٹ کے بعد حادثے کے ذمیداران کے خلاف مروجہ قانون کے


تحت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ دوسری جانب سیٹلائیٹ ٹاؤن پولیس نے اے ایس آئی ریاض رنگو خان کی سرکاری مدعیت میں ایگزیکیٹیو انجنیئر حیسکو میرپورخاص احمد فراز، ایس ڈی او حیسکو سیٹ لائیٹ ٹاؤن ریاض میو اور لائن سپریڈنٹ مینٹینس حیسکو سیٹ لائیٹ ٹاؤن عبدالستار کے خلاف مقدمہ درج کرکے ملزمان کی گرفتاری کے لئے ان کی رہائشگاہوں اور مختلف مقامات پر چھاپے مارے تاہم کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی بعد ازاں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کے ورثاؤں کی جانب سے مین جرواری شاخ روڈ بلاک کرکے احتجاج کیا گیا اور واپڈا حکام کے خلاف سخت کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا گیا واضع رہے کی میرپورخاص میں گیارہ ہزار وولٹیج کی تاریں گرنے کے چار واقعات پہلا واقعہ خاصخیلی پاڑے میں دوسرا واقعہ شادمان ٹاؤن میں تیسرا واقعہ نمرہ ٹاؤن میں اور چوتھا واقعہ سٹلائٹ ٹاؤن گراؤنڈ نمبر دو کے قریب پیش آیا ہے ٭٭

میرپورخاص == تحسین احمد خان === میرپورخاص پریس کلب کے سابق ممبر و سینئر صحافی ہوت خان خاصخیلی مختصر علالت کے بعد قضائے الہی سے انتقال کر گئے مرحوم کی نماز جنازہ اور تدفین ان کے آبائی گاٹھ کوٹ غلام محمد میں ہوئی جس میں بڑی تعداد میں صحافیوں وکلاء ڈاکٹرز، اور مختلف حلقوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی جبکہ سابق ضلعی چیئرمین میر انور تالپور، پاکستان میڈیا کونسل سندھ کے سرپرست اعلی ملک عبدالغفار، ڈویژنل چیئرمین اسماعیل خلجی، اکبر راجپوت رانا صالح راجپوت نے ان کی رہائش گاہ پر مرحوم کے صاحبزادوں سے تعذیت کی اور مرحوم کے ایصال وثواب کے لئے فاتحہ خوانی کی ٭٭
===========================