سابق صدر ممنون حسین 31 غیر ملکی دورے کیے، سرکاری مال خرچ ہوا

موجودہ حکومت کی جانب سے ماضی کے حکمرانوں کے غیر ملکی دوروں اور ان پر ہونے والے سرکاری اخراجات کے حوالے سے ایک رپورٹ مرتب کی گئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ سابق صدر ممنون حسین نے 31 غیر ملکی دورے کیے جن میں سے سات دورے سعودی عرب کے تھے یہ تمام ذاتی طور پرتھے جن پر کروڑوں روپے خرچ ہوئے ۔انہوں نے ستائیس کروڑ 82 لاکھ روپے خرچ کر ڈالے 14 لاکھ روپے کے تحفے بانٹ دیئے، ایک کروڑ روپے ٹپ میں ادا کر دیے۔ اسی طرح سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے 48 اڑتالیس غیر ملکی دورے کیے ۔ 2008 افراد کو سرکاری خرچے پر دنیا کی سیر کرائی، نو ذاتی دورے سرکاری خرچ پر کیے اپنی فیاضی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک کروڑ روپے ٹپ ادا کردیں۔ پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے والے اور سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے چھ مہینوں کی وزارتِ عظمیٰ میں نو غیر ملکی دورے کیے جن میں سعودی عرب اور اجمیر شریف کے دو ذاتی دورے بھی سرکاری خرچ پر شامل تھے انہوں نے 398 لوگوں کو سرکاری خرچ پر سیر سپاٹے کرائے، دس کروڑ 70 لاکھ روپے خرچ کیے اور 8لاکھ روپے کے تحائف بانٹے اور 47 لاکھ روپے ٹپ ادا کی۔ اس رپورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف، سابق وزیراعظم شوکت عزیز، سابق وزیر اعظم ظفر اللہ جمالی اور سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق صدر پرویز مشرف کا کوئی ذکر نہیں ہے توقع کی جارہی ہے کہ آنے والی کسی رپورٹ میں مزید تفصیلات سامنے آئیں گی۔




[embedyt] https://www.youtube.com/watch?v=we9Cr2qXHxo[/embedyt]