بارش میں کراچی شہر اور بحریہ ٹاؤن دو مختلف منظر پیش کرتا ہے

بارش اہلیان کراچی کے لئے نئی مشکلات پیدا کرتی ہے انفراسٹرکچر کی بدحالی شہریوں کو مصیبت میں ڈال دیتی ہے جگہ جگہ پانی کھڑا ہو جاتا ہے اور بجلی کی آنکھ مچولی شروع ہوجاتی ہے بجلی غائب ہونے سے پانی کی فراہمی بھی رک جاتی ہے سڑکوں پر پانی کھڑا ہو جاتا ہے اور ٹریفک جام ہو جاتا ہے کئی سال سے یہی صورتحال ہے اور شہری یہ منظر دیکھ دیکھ کر تنگ آ چکے ہیں ہر مرتبہ حکومت اور انتظامیہ کی جانب سے بلندوبانگ دعوے کیے جاتے ہیں ہر سال کروڑوں اربوں روپے کے فنڈز ان کاموں پر خرچ کیے جاتے ہیں لیکن جب بارش  آتی ہے تو کچھ بھی نہیں بدلا ہوتا سب کچھ پہلے کی طرح مسائل سے بھرپور ہوتا ہے ۔دوسری طرف سپر ہائی وے پر بنایا گیا بحریہ ٹاؤن جدید سہولتوں کی وجہ سے بارش کے دوران بالکل منفرد منظر پیش کرتا ہے جہاں صفائی ستھرائی اور سبزہ بارش میں ہر آنے والے کو اپنی جانب کھینچتا ہے جو کوئی بھی بارش میں بحریہ ٹاؤن پہنچتا ہے وہاں کے منظر دیکھ کر اس کا دل باغ باغ ہو جاتا ہے بہترین انفراسٹرکچر کی فراہمی اور صفائی ستھرائی اور نکاسی آب  کے انتظامات کرنے پر بحریہ ٹاؤن کی تظام یہ اور ملک ریاض سمیت ان کی پوری ٹیم مبارکباد کی حقدار ہے ۔کاش حکومت سندھ اور مقامی انتظامیہ بھی بحریہ ٹاؤن سے کچھ سبق حاصل کریں اور کراچی کے شہریوں کو بارش کے موسم میں مستقل مسائل اور مشکلات سے نجات دلانے میں اپنا کردار مثبت انداز سے ادا کرسکے تاکہ اسے بھی ہرشہری مبارکباد پیش کرے ۔ جیوے پاکستان رپورٹ 






اپنا تبصرہ بھیجیں