سندھ پریوینشن اینڈ کنٹرول آف تھیلیسیمیا ایکٹ 2013 کے قوانین جلد مرتب کرکے نافذ کردیے جائیں گے : قائم مقام اسپیکر سندھ اسمبلی

کراچی: قائم مقام اسپیکر سندھ اسمبلی ریحانہ لغاری نے یقین دلاتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ پریوینشن اینڈکنٹرول آف تھیلیسیمیا ایکٹ 2013کے قوانین جلد مرتب کرکے نافذ کردیے جائیں گے۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے وفاقی ایوان ہائے صنعت وتجارت کی اسٹینڈنگ کمیٹی اورتھیلیسمیا سینٹرز کی جانب سے عالمی دن برائے خون عطیات کے حوالے سے فیڈریشن ہاؤس میں منعقدہ ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سیمینار میں وزیراعلی سندھ کے معاون خصوصی اشفاق میمن،سینئرنائب صدرمرزااختیاربیگ،نائب صدرمسلم محمدی اورکراچی میں واقع مختلف تھیلیسیما سینٹرز کے نمائندگان نے شرکت کی۔

سیمینار میں وفاقی ایوان ہائے صنعت وتجارت کی اسٹینڈنگ کمیٹی کے کنوینئرڈاکٹرزاہد حسن انصاری اوردیگرنائندگان نے قائم مقام اسپیکر سندھ اسمبلی ریحانہ لغاری توبڑھتے ہوئے تھیلیسیمیا کے مریضوں،خون کی طلب اوررسداوردیگرمسائل پر تفصیلی بریفنگ دی اورکہا کہ تھیلیسمیا کی روک تھام اور علاج کی ساری ذمہ داری نجی سینٹرز پر ڈالی ہوئی ہے جبکہ حکومت کی جانب سے بل پاس ہونے کے باوجود کوئی لائحہ عمل نظرنہیں آرہا اورنہ حکومت کی جانب سے کوئی سرپرستی کی جارہی ہے جس کے باعث نجی اداروں پر مسلسل دباؤ بڑھ رہا ہے۔




قائم مقام اسپیکر سندھ اسمبلی ریحانہ لغاری نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری وہ واحد لیڈرہیں جنہوں نے اپنے کارکنوں سے نہ صرف خون عطیہ کرنے کی اپیل کی بلکہ خود بھی خون عطیہ کرکے انسانیت کی اعلی مثال قائم کی۔انہوں نے یقین دلایا کہ سندھ پرویونشن اینڈکنٹرول ایکٹ آف تھیلیسیمیا ایکٹ 2013کے قوانین جلد از جلد مرتب کرلیے جائیں گی اور اس کے فوری بعد اسے صوبہ میں نافذ کردیا جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ تھیلیسیمیا کی روک تھام سے متعلق وسیع پیمانے پر تشہیر کی ضرورت ہے اور سندھ حکومت اس معاملے میں عملی اقدامات اٹھائے گی اور تشہیر کو ممکن بناتے ہوئے کوشش کرے گی کہ سندھ حکومت کے ملازمین کا تھیلیسیمیا چیک اپ کرایا جاسکے۔