ہاکس بے کے صحافیوں کے پلاٹوں پرقبضے کا معاملہ

صوبائی وزیرشبیربجارانی اورسعیدااللہ آفریدی کی اسپیکرسےبات چیت
اسپیکرسندھ اسمبلی نے صحافیوں کے مطالبات کی حمایت کردی
ہاکس بے کے پلاٹ اس دورمیں دیے گئے جب میں وزیربلدیات تھا،اسپیکرآغاسراج درانی
کراچی : سندھ اسمبلی نے ہاکس بے صحافی کالونی میں کراچی پریس کلب کے ممبران کے پلاٹوں پر قبضے کے خاتمہ کے مطالبے کی تائید کرتے ہوئے حکومت سندھ سے کہا ہے کہ صحافیوں کے پلاٹوں پر قبضے کے معاملے کو فوری طور پر حل کیا جائے اور اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے کہا ہے کہ صحافیوں کو یہ پلاٹ اس وقت دیئے گئے تھے جب میں وزیر بلدیات تھا ۔منگل کو صحافیوں نے ہاکس بے کراچی صحافی کالونی میں کراچی پریس کلب ممبران کے پلاٹوں پر قبضے کے خلاف کراچی پریس کلب سے سندھ اسمبلی تک احتجاجی مارچ کیا اور دھرنا بھی دیا اور سندھ اسمبلی کی پریس گیلری میں خاموش مظاہرہ اور کا واک آؤٹ کیا۔

مظاہرے کے شرکاء نے پلے کارڈز اور بینرز اٹھارکھے تھے ،جن پر قبضے کے خاتمہ سے متعلق مطالبات درج تھے ۔ سندھ اسمبلی کی کوریج کرنے والے صحافیوں کے خاموش احتجاج اور علامتی واک آؤٹ پراسپیکر نے حکومتی وزراء کو صحافیوں سے بات چیت کی ہدایت کی جس پر وزیر بلدیات سعید غنی اور دیگر ارکان صحافیوں سے ملاقات کی اور اب کے مطالبات معلوم کئے ۔بعد ازاں صحافی احتجاج کرتے ہوئے اسمبلی کے باہراحتجاجی دھرنے میں شامل ہوئے جہاں پر صوبائی وزیر بلدیات سعید غنی ،اور صوبائی وزیر شبیر بجارانی ،تحریک انصاف کے ارکان راجہ اظہر خان ،ڈاکٹر سعید اللہ آفرید ی نے بھی صحافیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے دھرنے میں شرکت کی ۔بعد ازاں صوبائی وزیر شبیر بجارانی نے ایوان کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت سندھ نے صحافیوں کو 2010میں لیاری ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں زمین فراہم اور اس کی قرعہ اندازی اس وقت کے وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ نے کی تھی اس زمین کے کچھ حصے پر قبضہ ہوا ہے ۔صحافیوں کا مطالبہ ہے کہ اس قبضے کا خاتمہ کروایا جائے۔



صحافیوں کا کہنا ہے کہ ہم نے رقم کی ادائیگی بھی کی ہوئی ہے، ان کا یہ مطالبہ جائز ہے ۔اس پر اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے کہا کہ صحافیوں کا مطالبہ جائز ہے ۔یہ زمین اس وقت فراہم کی گئی تھی جب میں وزیر بلدیات تھا ۔انہوں نے کہا کہ ایوان صحافیوں کے جائز مطالبات کی تائید کرتا ہے۔انہوں نے حکومت سندھ سے کہا کہ صحافیوں کے اس مطالبے کے حل کے لیے فوری طور پر اقدام کرے اور تحریک انصاف نے وفاقی حکومت کی جانب سے تعاون کی یقین دہانی کروائی ہے ۔تحریک انصاف کے سعید اللہ خان نے کہا کہ صحافیوں کا جو مطالبہ ہے اس کا تعلق وفاق کے ایک ادارہ ہے اور وفاق میں ہماری حکومت ہے ۔ہم ایوان کو یقین دہانی کراتے ہیں کہ گورنر سندھ اور دیگر متعلقہ حکام سے فوری طور پر رابطہ کیا جائے گا اور جلد صحافیوںکے مطالبے کی تکمیل کے لیے اقدام کیے جائیں گے اور ہم حکومت سندھ کے ساتھ ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہیں ۔ قبل ازیں مظاہرے سے خطاب میں پی ٹی آئی کے رکن سندھ اسمبلی راجہ اظہر نے یقین دہانی کرائی کہ وہ وفاقی حکومت سے رابطہ کرکے اس مسئلے کو ہر ممکن حل کرنے کی کوشش کریں گے ۔