ٹی وی اینکر مرید عباس قتل کیس میں عینی شاہد عمر ریحان کا انکشافات سے بھرپور بیان قلمبند

ٹی وی اینکر مرید عباس قتل کیس میں زندہ بچ جانے والے عینی شاہد عمر ریحان کا انکشافات سے بھرپور بیان پولیس نے قلمبند کرلیا ہے ۔عمر ریحان نے پولیس کو بتایا عاطف زمان نے فون کرکے کہا تھا کہ مرید کو لے کر دفتر آ ؤ اس کی فائل کلوز کرنی ہے ۔
بیان کے مطابق میں اور مرید عباس عاطف کے دفتر میں بیٹھے تھے وہ بعد میں آیا عاطف زمان نے آتے ہی بغیر کوئی بات کئے فائرنگ کردی ۔عاطف زمان نے مجھے بھاگنے کو کہا اور میں گھبرا کر وہاں سے بھاگ نکلا ۔ خیال رہے کہ سی سی ٹی وی فوٹیج میں جس شخص کو اس ویڈیو سے گرتا ہوا دیکھا گیا وہ عمر ریحان ہی ہے ۔ پولیس ذرائع کے مطابق عمر کا 2017 سے عاطف سے رابطہ تھا یہ ایک دوسرے کو جانتے تھے ۔ پولیس افسر طارق داریجو کے مطابق عاطف کے ڈرائیور ندیم کو حراست میں لے لیا گیا ہے ۔ پولیس نے اب تک یہ پتہ چلایا ہے کہ عاطف کوئی کاروباری نہیں تھا پیسے رولنگ کرتا تھا کلائنٹس کو ٹائروں کے کاروبار کا بتا رکھا تھا اور یہ سب جھوٹا فرضی کاروبار تھا ۔ملزم نے کلائنٹ کو دکانیں اور کام دکھا رکھے تھے پیسے ایک جگہ سے آتے اور دوسری جگہ دیتا تھا ۔ اس نیٹ ورک میں مزید نئے نام سامنے آئے ہیں۔