ANF کی نفری مزید بڑھانے کیلئے وزیر اعظم سے درخواست کروں گا، گورنر سندھ

اے این ایف،رینجرز اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے سی پی ایل سی میں منشیات کے حوالے سے درج کروائی گئی شکایات پر فوری کارروائی عمل میں لائے گا
کراچی : گورنرسندھ عمران اسماعیل نے کہاکہ اے این ایف (ANF) منشیات کی روک تھا م کے لئے انتہائی اہم کام کررہا ہے، ضرورت اس امر کی ہے کہ نجی ادارے بھی منشیات کی روک تھام میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں، منشیات کے استعمال سے معاشرے پر مضر اثرات مرتب ہوتے ہیں جس کی روک تھام کے لئے تمام متعلقہ اداروں کو آپس میں باہمی رابطوں کو مزید مضبوط اور موثر بنانا ہوگا۔

[embedyt]https://www.youtube.com/watch?v=3bgDy9yZWxY[/embedyt]

آج کے دور میں مختلف اقسام کی منشیات کا استعمال ہور ہا ہے ضرورت اس بات کی ہے کہ تعلیمی اداروں اور دیگر جگہوں پر ان کی روک تھام کے لئے حکومت کا بھرپور ساتھ دیا جائے۔  ان خیالات کا اظہار انہوں نے اینٹی نار کوٹکس فورس کی جانب سے منعقدہ سمینار باعنوان “Drug Abuse – A Growing problem for Society” میں بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ خطاب کرتے ہوئے گورنر سندھ نے اس بات کا عندیہ بھی دیا کہ وہ جلد وزیر اعظم سے ANF کی نفری بڑھانے کے لئے بات کریں گے تاکہ صوبے بھر میں مزید موثر انداز سے منشیات کی روک تھام یقینی بنائی جاسکے۔ CPLC کے مرکزی دفتر میں منشیات کے حوالے سے شکایات درج کروائی جاسکتی ہیں جبکہ ان معلومات کی بنیاد پر ANF ،رینجرز اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے بروقت کارروائی کریں گے۔گورنر سندھ نے کہا کہ منشیات کی روک تھام یقینی بنانے اور ملوث افراد کو کیفر کردار تک پہنچانے کے لئے معاشرے کے ہر شہری میں شعور بیدار کرنا ہوگا۔



انہوں نے مزید کہا کہ اس لعنت سے چھٹکارا حاصل کرنے والے افراد کی بحالی کے لئے کام کرنے والے اداروں کو مزید بہتر بنانے میں مخیر حضرات کا کردار اہمیت کا حامل ہے۔
اس سے قبل ڈی جی اے این ایف میجر جنرل محمد عارف ملک, چیف سی پی ایل سی زبیر حبیب اور دیگر شرکاء نے بھی خطاب کیا۔ آخر میں ڈی جی اے این ایف میجر جنرل محمد عارف ملک نے گورنر سندھ عمران اسماعیل کو ادارے کی جانب سے یادگاری شیلڈ پیش کی۔