آصف زرداری اپنا چیئرمین سینیٹ لانے کی بجائے خود چیئرمین سینیٹ بننے کے خواہش مند

مولانا فضل الرحمن کی جانب سے بلائی گئی آل پارٹیز کانفرنس میں سخت موقف اختیار کرنے والی مریم نواز شریف چاہتی ہیں کہ چیئرمین سینیٹ کو پہلی فرصت میں تبدیل کیا جائے ان کے نزدیک چیئرمین سینیٹ کو عہدے سے ہٹانا اس حکومت کی پہلی اینٹ گرانے کے مترادف ہوگا۔پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نون اس حوالے سے مشاورت کر چکے ہیں لیکن چیئرمین سینیٹ کو ہٹانا اتنا آسان نہیں ہے مسلم لیگ کو پیپلز پارٹی کی مکمل حمایت اور مدد درکار ہے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو بنانے میں بھی پیپلزپارٹی کا کردار تھا اور اب صادق سنجرانی نے آصف زرداری سے ملاقات کی ہے۔

[embedyt]https://www.youtube.com/watch?v=3bgDy9yZWxY[/embedyt]

جس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ صادق سنجرانی نے عیادت کرنے کے بہانے ان کی حمایت مانگی ہے جبکہ بلاول بھی ان کو ہٹانے کے مخالف ہیں لیکن مقدمات کی وجہ سے آصف زرداری دباؤ میں ہیں اور اس دباؤ سے نکلنے کے لیے مسلم لیگ نون کی حمایت حاصل کرنا چاہتے ہیں مولانا فضل الرحمن کا کندھا استعمال کیا جارہا ہے مسلم لیگ نون کی حمایت حاصل کر کے حکومت پر دباؤ ڈال کر آصف زرداری اپنے لیے ریلیف حاصل کرنا چاہتے ہیں اگر حکومت کے ساتھ معاملات طے نہ پائے تو پھر چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی عمل میں آئے گی لیکن آصف علی زرداری کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر چیئرمین سینیٹ کو تبدیل کیا گیا تو پھر آصف زرداری اپنا چیئرمین لانے کی بجائے خود چیئرمین سینیٹ بننے کی خواہش رکھتے ہیں۔



آصف علی زرداری اس وقت قومی اسمبلی کے ممبر ہیں اور گرفتاری کے باوجود وہ سینیٹ کے ممبر بن سکتے ہیں سیاسی مبصرین کے مطابق آصف زرداری ہمیشہ سے اپنے سیاسی مخالفین کو سرپرائز دیتے آئے ہیں۔ جنرل مشرف کو صدارت سے ہٹانے کے بعد خود صدر بن کر انہوں نے سب کو سرپرائز دیا تھا مقدمات سے جان چھڑانے کے لیے اب ایک مرتبہ پھر وہ اس طرح کا کارڈ کھیل سکتے ہیں ۔اس مرتبہ انہیں مسلم لیگ نون کی حمایت درکار ہوگی۔ اے پی سی کے حوالے سے اندرونی کہانی بھی سامنے آگئی ہے۔ چیئرمین سیںٹ صادق سنجرانی کو ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔



میر حاصل بزنجو نے کانفرنس مین زور دیا کہ چیئرمین بلوچستان سے لیا جائے۔ بلوچستان نیشنل پارٹی کے رہنماوٗں کی چیئرمین سیںٹ کے معاملے پرم آل پارٹیز کانفرنس میں تفصیلی بات چیت۔ چیئرمین سیںنیٹ کا امیدوار ہماری پارٹی سے لیا جائے، نیشنل پارٹی کا کانفرنس میں پرزور مطالبہ۔ میر حاصل بزنجو خود چیئرمین سیںنیٹ کے لیے مضبوط امیدوار کے طور پر سامنے آگئے۔