ذوالفقارآباد آئل ٹرمینل کو قابل استعمال بنانے اور شیرین جناح کالونی سے آئل ٹینکرز کومنتقل کرنے کے حوالے سے اہم اجلاس  

شہریوں کو آسانیاں فراہم کرنے کیلیے ٹریفک کی روانی کو یقینی بنا جائے۔سپریم کورٹ میں فائنل رپورٹ پیش کرنے سے پہلے تمام ادارے عملی کردار ادا کرکے عملدرآمدکو یقینی بنائیں۔کے ایم سی علاقہ کو صاف کرنے کیلئے قانونی نوٹس دے کر3جولائی تک رپورٹ پیش کریں۔ڈی سی ملیر اس سلسلے میں نگرانی کرکے رپورٹ پیش کریں۔کمشنر کراچی
کراچی: کمشنر کراچی افتخار شالوانی کی زیر صدارت سپریم کورٹ کے فیصلہ کی روشنی میں ذوالفقارآباد آئل ٹرمینل کو قابل استعمال بنانے اور شیرین جناح کالونی سے آئل ٹینکرز کومنتقل کرنے کے حوالے سے آج ایک ا ہم اجلاس انکے دفتر میں منعقد ہوا جس میں کے پی ٹی ، پولیس ، کے ایم سی،آئل کمپنی اور ضلعی انتظامیہ کے نمائندوں نے شرکت کی۔کمشنر کراچی افتخار شالوانی نے تمام متعلقہ اداروں کے نمائندوں پر زوردیا کہ سپریم کورٹ کے واضح احکامات ہیں کہ شیرین جناح کالونی سے آئل ٹینکرز کومنتقل کرکے ذوالفقارآباد آئل ٹرمینل کو قابل استعمال بنایا جائے۔

embedyt]https://www.youtube.com/watch?v=3bgDy9yZWxY[/embedyt]

لہذا اس سلسلے میں اب کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائےگی پہلے ہی بہت دیر ہوچکی ہے اب متعلقہ علاقہ کو صاف کرکے شہریوں کو آسانیاں فراہم کرنے کیلیے ٹریفک کی روانی کو یقینی بنا جائے اورفائنل رپورٹ پیش کرنے سے پہلے خاص کارکردگی پیش کرنے کیلئے تمام ادارے اپنا اپناکردار ادا کرکے عملدرآمدکو یقینی بنائےں۔ کمشنر کراچی نے کے ایم سی کو ہدایت دی کہ وہ علاقہ کو صاف کرنے کیلئے اپناقانونی نوٹس دے کر3جولائی تک رپورٹ پیش کریںاور ذوالفقارآباد آئل ٹرمینل کو قابل استعمال بنانے کیلیے بنیادی ڈھانچہ کی فراہمی کے ساتھ ساتھ بنیادی سہولیات فراہم کرنے کیلیے بھی فوری اقدامات کریں۔



کمشنر کراچی
نے کے پی ٹی کو بھی ہدایت کی کہ وہ پولیس سے تعاون کرکے اس مسئلہ کو حل کریں انہیں مکمل مددفراہم کرینگے۔آئل کمپنی کے نمائندوں نے آگاہی دی کہ انہوں نے مقررہ ادائیگی بھی کردی ہے لیکن ابھی تک کوئی پیش رفت نہیں ہوئی ہے،پی ایس اونے آگاہی دی کہ انکے سارے ٹینکرزمناسب طریقہ سے تیل کی فراہمی میں اپناکردار اداکررہے ہیں دیگر اداروں کو پابند بنایا جائے کہ وہ بھی تعاون کریں۔5800 ٹینکرز رجسٹرڈ ہیں اور اپنی کارکردگی دے رہے ہیں۔2 افسران بھی موجود ہوتے ہیں جو مسلسل نگرانی پر مامور ہیں۔کے پی ٹی نے بتایا کہ انکے پلاٹ پر بھی قبضہ ہے اوروہ کافی بڑا خرچ کرکے کافی ترقیاتی کام کراچکے ہیں کافی جگہ صاف ہے اور اب منتقلی کے بعد وہ پلاٹ بھی خالی کرایا جائے۔



کے پی ٹی کی درخواست پر کمشنر کراچی نے انکے69000
اسکوائر میٹرپلاٹ پر سے قبضہ ختم کرانے کیلیے بھی یقین دہانی کرائی کہ انتظامیہ مکمل تعاون کریگی۔ کے ایم سی پی ڈی ٹرمینل نے بتایا کہ ذوالفقارآباد آئل ٹرمینل پرایک کینٹین ، 128 واش رومزاورمکمل چاردیواری بھی تعمیرکی گئی ہے دیگر کام کرانے کیلیے بھی منصوبہ بندی جاری ہے۔کمشنر کراچی نے ڈی سی ملیر کو ہدایت کی کہ وہ بھی اس سلسلے میں نگرانی کرکے رپورٹ پیش کریں۔