بلوچستان میں لورالائی پولیس لائن پر حملہ کرنے والے تینوں دہشت گرد مارے گئے ، ایک پولیس حوالدار شہید

لورالائی پولیس لائن بلوچستان میں ہونے والے دہشت گردوں کے حملے میں 3 خودکش دہشت گرد حملہ آور مارے گئے جبکہ ایک پولیس ہیڈ کانسٹیبل اللہ نواز نے جام شہادت نوش کیا دو پولیس اہلکار زخمی ہوئے۔  ترجمان حکومت  بلوچستان لیاقت شاہوانی کے مطابق لورالائی پولیس لائن پر دہشت گردی کا واقعہ قابل مذمت ہے۔ 

[embedyt]https://www.youtube.com/watch?v=3bgDy9yZWxY[/embedyt]

وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے واقعہ کی فوری رپورٹ طلب کرلی ہے۔  واقعہ میں ایک پولیس اہلکار کی شہادت جبکہ دو زخمی ہوئے۔ پولیس اہلکاروں نے جرت و بہادری سے حملہ ناکام بنایا ۔ دہشت گردوں کے مذموم مقاصد پورے نہیں ہوئے۔ پولیس فورس کے اہلکاروں نے حملہ ناکام کرکے ایک پروفیشنل اور باصلاحیت فورس ہونے کا ثبوت دیا۔ حملے میں شہید ہونے والے اہلکار کی بہادری پر خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔ دہشت گردی کے اس واقعہ کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔



سیکورٹی فورسز کے حوصلے اور مورال بلند ہے۔
وزیراعلئ بلوچستان جام کمال خان کی لورالائی پولیس لائن پر دہشت گردوں کے حملے کی مذمت، وزیراعلیٰ کا دہشت گردی کے واقعہ میں ایک پولیس اہلکار کی شہادت اور دو اہلکاروں کے زخمی ہونے پر دکھ کا اظہار، پولیس اہلکاروں نے دلیری سے دہشت گردوں کا مقابلہ کر کے حملہ ناکام بنایا۔ پولیس کی بروقت کارروائی اور بھرپور ردعمل نے ثابت کیا کہ ہمارے سیکیورٹی ادارے ہر قسم کی صورتحال سے نمٹنے کے لیۓ تیار ہیں۔ دہشت گردی کے مکمل خاتمے کا ہمارا عزم پختہ ہے بزدلانہ حملوں سے مرعوب نہیں ہونگے۔ پولیس فورس کی قربانیاں نا قابل فراموش ہیں شہداء کی یہ قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ وزیراعلیٰ کا شہید پولیس اہلکار کے خاندان سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار۔