اگلے 10 سے 25 برسوں میں پاکستان کو آبادی کے لحاظ سے کن چیلنجوں کا سامنا ہوگا؟

آبادی میں تیزی سے ہونے والے اضافے کے حوالے سے اقوام متحدہ کی ایک حالیہ رپورٹ کے بعد پاکستان کی آبادی کے لحاظ سے ماہرین تشویش کا شکار ہیں پاکستان 2030 تک دنیا میں آبادی کے لحاظ سے چوتھا بڑا ملک بن جائے گا 2019 میں پاکستان کا دنیا میں نمبر آٹھواں ہے لیکن جس تیز رفتاری سے پاکستان کی آبادی میں اضافہ ہو رہا ہے آنے والے دنوں میں اسے مزید مشکلات اور وسائل کی کمی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

[embedyt] https://www.youtube.com/watch?v=ji6Vk0vVtyI[/embedyt]

سب سے بڑا چیلنج پینے کے پانی کی دستیابی ہے پاکستان میں ڈیموں کی شدید کمی ہے اور پانی کے ذخائر نہ ہونے کے مسائل سے آبادی دوچار ہے بڑے شہروں سمیت زرعی ملک ہونے کی وجہ سے گاؤں دیہاتوں میں بھی آنے والے برسوں میں پانی کی شدید کمی سے مسائل پیدا ہوں گے پاکستان میں ناخواندگی کی وجہ سے فیملی پلاننگ کے جدید طریقوں کی آگاہی نہیں ہے فیملی پلاننگ کے اوپر زیادہ توجہ نہیں دی گئی اور اس سلسلے میں بات کرنا بھی معاشرے میں زیادہ اچھا نہیں سمجھا جاتا۔ملک میں سرکاری اور غیر سرکاری طور پر فیملی پلاننگ کے حوالے سے کافی کام ہورہا ہے لیکن جس رفتار سے آبادی میں اضافہ ہوا ہے۔



اسے دیکھتے ہوئے ماہرین کا کہنا ہے کہ اس پر ہونے والا کام ناکافی ہے خواتین کے ساتھ ساتھ مردوں کو اس سلسلے میں آگاہی دینا ضروری ہے ماہرین کے مطابق 2050 تک پاکستان کی آبادی 30 کروڑ سے زیادہ ہو جائے گی پاکستان کے اکثر علاقوں میں بچوں کی بڑی تعداد پیدائش کے تھوڑے عرصہ بعد  مناسب سہولتیں اور پرورش کے انتظامات نہ ہونے کی وجہ سے انتقال کر جاتے ہیں اور مختلف بیماریاں اس کی وجہ بنتی ہیں،  نوزائیدہ بچوں کی اموات کی شرح زیادہ ہے پاکستان میں تعلیم کی سہولتوں کی کمی ہے جس کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ ڈھائی کروڑ سے زیادہ بچے اسکول نہیں جاتے ۔