31

حکومت مخالف تحریک کے اوپننگ بیٹسمین مولانا فضل الرحمان ہوں گے، بلاول اور مریم کی مشاورت

وزیراعظم عمران خان کی حکومت کے خلاف اپوزیشن کی شروع ہونے والی تحریک کے اوپننگ بیٹسمین مولانا فضل الرحمن ہوں گے پاکستان مسلم لیگ نون اور پاکستان پیپلز پارٹی ان سے مسلسل رابطے میں ہے شہباز شریف اور بلاول بھٹو کی ان سے ملاقاتیں بھی اسی سلسلے کی کڑی ہیں بلاول اور مریم نواز بھی مشاورت کر چکے ہیں حکومت مخالف تحریک کا سب سے اہم کردار جمیعت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن ہیں وہ سڑکوں پر نکلنے کے لیے تیار ہیں اور اسلام آباد کو لاؤڈ ان کرنے اور تاریخی دھرنا دے کر حکومت گرانے کی سوچ رکھتے ہیں انہیں صرف مسلم لیگ نون اور پیپلز پارٹی کے اعلانیہ حمایت کرنے کے اعلان کا انتظار ہے۔



نواز شریف کے بعد آصف زرداری کی گرفتاری کی وجہ سے اب یہ اعلان زیادہ دور نظر نہیں آتا۔پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نون دونوں اپنے لیڈرشپ کو مقدمات سے باہر نکالنے کے لیے حکومت پر دباؤ بڑھا رہی ہیں دوسری طرف حکومت بھی اپوزیشن جماعتوں کی سیاسی سرگرمیوں پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں حکومت کی جوابی حکمت عملی بھی تیار ہے جو جو اولیشن اپنا ضلع حکومت پر بڑھے گی حکومت کی جانب سے جوابی کاروائیاں اور مزید گرفتاریوں کا امکان بڑھتا جا رہا ہے ابو نیشن کے رہنماؤں پر مزید مقدمات قائم ہونا اور ان مقدمات میں نہیں گرفتاریاں خارج از امکان نہیں ہیں آنے والے دنوں میں سیاست سڑکوں پر ہوتی نظر آرہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں