37

ورلڈ کپ میں بھارت کو شکست دینے کا ستائیس سالہ خواب چکنا چور … تماشائی پاکستان کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں سے سخت ناراض

پاکستان کرکٹ ٹیم کی بھارت کے ہاتھوں ورلڈ کپ میں شکست کے بعد پاکستانی پرستاروں کا برا حال ہے۔افسوس اور مایوسی غصے میں بدل چکی ہے اور پاکستانی کھلاڑیوں پر شدید غصہ نکالا جا رہا ہے۔سوشل میڈیا پر پاکستان کرکٹ ٹیم کے خلاف غصے سے بھرے ہوئے کمنٹس کا سیلاب آ چکا ہے ورلڈ کپ میں شرکت کرنے والے پاکستانی کھلاڑیوں کو ہیرو کی بجائے بہت برے الفاظ سے یاد کیا جا رہا ہے۔قومی اسمبلی میں خواجہ آصف کی کی گئی ایک مشہور زمانہ تقریر کچھ شرم ہوتی ہے کچھ حیا ہوتی ہے کچھ شرم کرو کچھ حیا کرو۔



پاکستانی کھلاڑیوں کے لیے وقف کر دی گئی ہے اور ہر جگہ پر پاکستانی کھلاڑی کے خلاف نعرے لگائے جا رہے ہیں پلے کارڈ پر پاکستانی کھلاڑیوں کے خلاف نعرے لکھے گئے ہیں پاکستانی کھلاڑیوں شرم کرو ڈوب مرو۔چو ڑیاں پہن لو ۔تم شاپنگ ہی کرتے رہو۔تم لوگ فیملی کے ساتھ دوستوں کے ساتھ رات بھر گھومتے رہو۔تم لوگ پارٹیاں کرو۔تم لوگوں کو شرم نہیں ہے ملک کی کوئی پرواہ نہیں ہے۔



ورلڈ کپ کرکٹ ٹورنامنٹ کے مقابلوں میں بھارت نے 7 ویں مرتبہ پاکستان کو شکست دی ہے پاکستان کرکٹ ٹیم ایک مرتبہ بھی بھارت کو ورلڈ کپ کے کسی میچ میں ہرا نہیں سکی۔اس مرتبہ کرکٹ شائقین کو یہ امید تھی کہ پاکستان 27 سالہ ریکارڈ توڑ دے گا لیکن ایسا نہ ہوسکا اور پاکستانی پرستاروں کا یہ خواب بھی چکنا چور ہو گیا ۔کرکٹ کے میدان میں ایک مرتبہ پھر ورلڈ کپ کے میچوں میں بھارت نے خود کو پاکستان سے بہتر ٹیم ثابت کر دکھایا ۔اگر پاکستان خود  کو مقابلے میں واپس لانا چاہتا ہے اور  بھارت سے بہتر ثابت کرنا چاہتا ہے تو آنے والے چار میچوں میں فتوحات حاصل کرکے اور بڑے مارجن سے جیت کر ایوریج بہتر بنانا ہوگی ۔پاکستان ابھی بھی سیمی فائنل کےلئے کوالیفائی کرنے کی پوزیشن میں ہے لیکن اس کا دارومدار اب اپنی فتوحات اور اچھے رزلٹ کے ساتھ ساتھ دوسری ٹیموں کی ہار جیت پر ہوگا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں