سی اے اے میں بھرتیوں کے خلاف خبروں پر وفاقی وزیر ہوا بازی غلام سرور کا نوٹس

 وفاقی وزیر ہوا بازی غلام سرور نے سوشل میڈیا پر بھرتیوں پر لگنے والے الزامات کی تفتیش کا حکم دے دیا، حال ہی میں سی اے اے میں ای جی ون کے سو سے زائد افسروں کو بھرتی کیا گیا ہے، سوشل میڈیا پر معتبر ذرائع نے بھرتیوں میں تیس لاکھ روپے فی تقرری رشوت کا الزام لگایا تھا۔ تقرریوں کے فوری بعد شعبہ ایچ آر کے اعلی افسر کی تیس لاکھ کی گاڑی خریدنے والی بات بھی درست نکلی۔ ریٹائر افسر کے بیٹے کی رشوت دے کر تقرری کی بھی وزیر ہوا بازی نے تحقیقات کی ہدایات جاری کردیں۔ خبریں لگنے کے فوری بعد ریٹائر افسر کے بیٹے کا ہیڈ کوارٹر سے جناح ائیرپورٹ تبادلہ کردیا۔



 
تبادلے کا مقصد اس کی تقرری پر ناراض افسران کی نظروں سے اسے دور کرنا تھا۔ شعبہ ایچ آر کے اعلی افسر نے ریٹائر افسر کو میڈیا پر خبریں رکوانے کا مشن سونپ دیا۔ تقرریوں میں گھپلے کی خبریں نہ چلانے کے لیے ایک کھری بات کرنے والے ایوی ایشن رپورٹر کی منت سماجت شروع کردی گئی۔ وفاقی وزیر نے سوشل میڈیا کی خبروں پر این ٹی ایس کے ساتھ ساز باز کی بھی تحقیقات کا حکم دے دیا۔