عوامی ورکرز پارٹی نے بجٹ کو عوام دشمن قرار دے کر مسترد کردیا

کراچی- عوامی ورکرز پارٹی بجٹ۔2019-2020کو عوام دشمن سمجھتی ہے اور رد کرتی ہے۔ عوامی ورکرز پارٹی وفاقی بجٹ کو عوام دشمن قرار دے کر رد کرتی ہے اور سمجھتی ہے کہ آئی ایم ایف سے قرضے لینے اور سابقہ قرضوں کی واپسی کے لئے ٹیکسوں کا غیر معمولی بوجھ عام لوگوں پر ڈال دیا گیا ہے، بجٹ میں سرمایہ دار طبقات کو رعائیتیں دی گئی ہیں اور محنت کش طبقات پر ڈائریکٹ اور ان ڈائریکٹ ٹیکسوں کو انبار لاد دیا گیا ہے۔ عوامی ورکرز پارٹی کم از کم تنخواہ میں معمولی اضافہ کو رد کرتی ہے اور مطالبہ کرتی ہے کہ محنت کش۔ طبقات کی کم از کم تنخواہ 30,000 روپے ماہانہ مقرر کی جائے۔ اور اس کا اطلاق زندگی کے تمام پرائیویٹ شعبوں میں یقینی بنایا جائے۔ عوامی ورکرز پارٹی پبلک سیکٹر کے محنت کشوں کے لئے دس فیصد اضافے کو انتہائی ناکافی سمجھتی ہے اور مطالبہ کرتی ہے کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی کے تناسب سے تنخواھوں میں کم از کم 30 فیصداضافہ کیا جائے۔



‏صحت کے لیے 93 ارب، تعلیم کے لیے44 ارب روپے جبکہ دفاع کے لئے 1300 ارب مختص کرنے سے حکومت کی ترجیحات کا اندازہ کیا جا سکتا ہے۔ حکومت کو غربت کے خاتمے کی نئی وزارت کا نام غریب خاتمہ وزارت رکھنا چاھئیے۔ کیونکہ اس بجٹ سے غربت میں بے حد اضافہ متوقع ہے، مرغی، چھوٹے بڑے گوشت پر ٹیکس لگانے کی عجیب منطق دی گئی کہ چانکہ یہ امیر کھاتے ہیں اس لئے اس پر ٹیکس نافذ کیا جا رھا ہے۔ پارٹی 147 ارب روپے کے نئے ٹیکسوں کو لگانے کی شدید مذمت کرتی ہے اور سمجھتی ہے کہ ان کے اطلاق سے زندگی کے استعمال کی ہر چیز مہنگی ہو جائے گی۔ بوتلوں، چینی، گھی، کوکنگ آئل، دودھ، گیس، این ایل جی، سیمنٹ سمیت دیگر پر نئے ٹیکسوں کے اطلاق سے واضح ہے کہ حکومت عوام کی مشکلات میں اضافے کے نئے نئے طریقے ڈھونڈ رہی ہے۔ یہ لوٹ مار بجٹ ہے، جو عوام پر ایک عذاب بن کر نازل ہوا ہے۔ صوبوں کے بجٹ میں کٹوٹیوں سے مرکزیت اور آمریت کے رحجانات کو بڑھاوا دیا ہے، ہائر تعلیم میں کٹوٹیوں سے چھوٹے صوبوں کے طالب علموں کو ملنے والے وظائف ختم ہوں گے اور نوجوانوں میں احساس محرومی اور شدت سے ابھرے گا۔ حفیظ شیخ کو مشیر خزانہ لگانے کا حقیقی مقصد اب سامنے آگیا ہے۔



یہ حکومت ائی ایم ایف کو ہر قیمت یہ بتانا چاھتی ہے کہ وہ قرضہ جات کیواپسی کو یقینی بنانے کے لئےاپنی انکم میں اضافے کے لئے کوئی بھی ناپسندیدہ اقتصادی قدم اٹھا سکتی ہے۔ اسی لئے بے جا ٹیکسوں کا انبار لگایا گیا ہے۔
عوامی ورکرز پارٹی محنت کش عوام سے اپیل کرتی ہے کہ اس عوام دشمن بجٹ کے خلاف جلسے جلوسوں، مظاہروں اور ہڑتالوں کے ذریعے حکومت کو مجبور کر دیا جائے کہ وہ یہ نئے ٹیکس فوری واپس لے، عوامی ورکرز پارٹی اس مزاحمتی تحریک میں عوام کا بھرپور ساتھ دے گی۔