احتجاج میں شامل سرکاری ملازمین کی گرفتاریوں کا امکان

وفاقی حکومت نے سرکاری ملازمین کے کسی بھی سیاسی پارٹی کے ساتھ احتجاج کرنے والے ملازمین کے خلاف کارروائی پر غور شروع کر دیا۔ جس کے تحت،  سرکاری ملازمین کو نوکریوں سے برطرف کیا جا سکے گا۔  سرکاری ملازمین کی گرفتاریاں بھی عمل میں لائی جائیں گی۔ یہ بھی دیکھا جائے گا کہ یہ ملازمین سیاسی پارٹیوں کے ساتھ کیوں احتجاج کرتے رہے، اس لیے ان کے خلاف انکوائری بھی کی جائے گی۔ انکوائری میں کرپشن ثابت ہونے پر ان کے کیس نیب میں منتقل کر دیے جائیں گے۔



اور مزید آپشنز پر بھی غور جاری، مگر یہ حکومتی عمل انتہائی تیزی سے عمل میں لایا جا سکے گا اور تمام صوبوں میں کارروائی ہو گی جس میں تمام گریڈز کے لوگ شامل ہوں گے اور کارروائی بلا امتیاز ہو گی۔ ایسے اقدامات سے اداروں میں موجود کالی بھیڑیں بھی نکل جائیں گی اور سزا پائیں گی، اس کے علاوہ نئی نوکریاں بھی پیدا ہوں گی جس سے مستحق لوگ اور میرٹ پر لوگ اداروں میں آ سکیں گے۔