لاڑکانہ میں ڈبلیو ایچ او WHO کی رپورٹ حکومت سندھ کی ناکامی ہے، سردار رحیم

کراچی -مسلم لیگ فنکشنل سندھ کے جنرل سیکریٹری اور جی ڈی اے کے سیکرٹری اطلاعات سردار عبدالرحیم نے لاڑکانہ میں ایچ آئی وی ایڈز سے متعلق ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی رپورٹ پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے سندھ حکومت کی بدترین ناکامی قرار دیا ہے انہوں نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او کی حالیہ رپورٹ سے حکومت سندھ کی کارکردگی کا پول کھل گیا ہے جو حکومت اپنے سیاسی قبلہ لاڑکانہ کی عوام کو صحت کی سہولیات فراہم نہ کرسکے اسے اقتدار سے چمٹنے کا کوئی حق نہیں ہے پیپلزپارٹی کی ناکام ترین حکومت حق حکمرانی کھو چکی ہے۔



سردار رحیم نے ارباب اختیار سے مطالبہ کیا کہ اس ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی اس ہولناک رپورٹ کو منظر عام پر لایا جائے تاکہ عوام یہ جان سکیں کہ ایک غاصب حکومت نے انکے ساتھ کتنا ظلم کیا ہے سردار عبدالرحیم نے مزید کہا ڈبلیو ایچ او نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ سندھ خاص طور پر لاڑکانہ میں تیزی سے پھیلنے والی ایچ آئی وی ایڈز  HIV Aids کی ذمہ داری سندھ حکومت پر عائد ہوتی ہے مناسب اور بروقت علاج نہ ہونے کی بناء پر یہ مرض معصوم بچوں میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لاڑکانہ کو پئرس بنانے کی دعویدار سندھ حکومت اور بلاول زرداری اس رپورٹ پر کیوں خاموش ہیں ؟ بلاول زرداری آخر کب تک پھوپھو کو بچانے میں مصروف رہیں گے دوسروں پر تنقید کرنے والے کب صحت کی ناکام وزیر پھوپھو صاحبہ سے استعفیٰ لیں گے؟



انہوں نے کہا کہ صوبائی وزیر صحت کے احکامات کو کوئی ماننے کے لیے تیار نہیں ہے ۔لاڑکانہ مین ایچ آئی وی  HIV ایڈز کے مریضوں کو ادویات نہیں مل رہیں مریض تڑپ تڑپ کر جان دے رہے ہیں ایچ آئی وی ایڈز اب لاڑکانہ سے پوری سندھ میں تیزی سے پھیل رہا ہے مگر سندھ حکومت نے سب اچھا ہے کی رٹ لگائی ہوئی ہے جس کی ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں ۔ سردار رحیم نے مطالبہ کیا کہ اس رپورٹ کو فوری طور منظر عام پر لایا جائے اور رپورٹ میں جن اداروں اور افراد کو ذمہ دار قرار دیا گیا ہے ان کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لائی جائے۔