بھارتی خفیہ ادارے را نے کراچی میں چینی قونصل خانے پر حملہ کرنے کے لئے 10 لاکھ ڈالر دیئے تھے

بھارتی انٹیلی جنس ادارے را نے کراچی میں چینی قونصل خانے کو نشانہ بنانے کے لیے حملہ آوروں کو دس لاکھ ڈالر ادا کیے تھے۔اس حوالے سے اوورسیز پاکستانی بلوچ یونٹی کے چیف ڈاکٹر جمعہ خان کا اہم انکشاف میڈیا میں سامنے آیا جس میں انہوں نے دعویٰ کیا تھا کہ بی ایل اے لیڈر حربیار مری کو ایک ملین ڈالر بھارتی خفیہ ایجنسی را نے دیے تھے تاکہ کراچی میں چینی قونصل خانے پر حملہ کیا جائے۔یاد رہے کہ ڈاکٹر مریم نے سب سے پہلے یہ دعویٰ کیا تھا کہ اسلم بلوچ عرف اچھو نے چینی کونسل خانے پر حملہ کیا۔اس حوالے سے ڈاکٹر جمعہ نے بچوں کی فیملی کو مخاطب کرتے ہوئے یہ سوال اٹھایا تھا کہ دس لاکھ ڈالر میں سے اس کی فیملی کو کیا ملا؟



یاد رہے کہ گزشتہ سال 30 نومبر کو مسلح افراد نے کراچی کے علاقے کلفٹن میں واقع ہی چینی کونسل خانے پر حملہ کیا تھا کافی دیر تک فائرنگ کی آوازیں سنی گئی تھی دو پولیس گارڈ سمیت دو سویلین اپنی جان کی بازی ہار بیٹھے تھے لیکن پاکستانی سیکیورٹی نے چینی سفارت کاروں اور چینی شہریوں کو کسی قسم کا نقصان نہیں پہنچنے دیا تھا اور حملہ کرنے والے تینوں دہشت گردوں کو مار دیا گیا تھا۔ بی ایل اے نے بعدازاں اس حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے مرنے والوں کی نشاندہی افضل خان بلوچ را زق بلوچ اور رئیس بلوچ کے نام سے کی تھی۔