بھارتی میڈیا نے گوشت والی ڈش کے خلاف منفی پروپیگنڈا شروع کر دیا

باربی کیو گوشت کو سگریٹ سے زیادہ خطرناک اور کینسر کا موجب قرار دینا شروع کردیا
بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی کی انتہا پسند جماعت بی جے پی کے دور حکومت میں بھارتی میڈیا نے گوشت والی ڈشز کے خلاف منفی پروپیگنڈا شروع کر دیا ہے بھارتی میڈیا نے سگریٹ سے زیادہ خطرناک باربی کیو گوشت کی ڈشز کو قرار دیتے ہوئے کینسر کا موجب بتانا شروع کردیا ہے اور لوگوں کو ڈرا رہا ہے ۔بھارتی میڈیا کا بنیادی مقصد لوگوں کو گائے اور بکرے کو قربان کرنے سے روکنا ہے تاکہ لوگ ان کا گوشت نہ کھائیں۔



بھارت میں اس وقت مسلمانوں کے لئے گوشت پر مبنی ڈشز کھانے کے حوالے سے سخت مشکلات کا دور ہے اتنی سختی اور پابندی ماضی میں کبھی نہیں تھی جتنی آج ہیں یہ سب بھارتیہ جنتا پارٹی بی جے پی اور نریندر مودی کی انتہا پسند ہندو سوچ اور پالیسیوں کا نتیجہ ہے دنیا بھر کے ڈاکٹروں نے بار بی کیو گوشت کو صحت کے لئے مفید قرار دے رکھا ہے صرف بھارتی میڈیا اس کے خلاف پروپیگنڈا کر رہا ہے اور نام نہاد ڈاکٹروں کے ذریعے اس کے خلاف کمنٹس لے رہا ہے۔
بھارتی میڈیا کا مقصد اور بدنیتی صاف نظر آرہی ہے کے کسی بھی طرح گاؤماتا کی قربانی کو روکا جا سکے۔ دنیا بھر میں گائے اور بکرے کے گوشت کو انتہائی لذیذ اور صحت مند مانا جاتا ہے اور خوشی خوشی کھایا جاتا ہے لیکن بھارت میں نہ مانوں کی رٹ لگائے ہوئے ہے۔