وزیرعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے عیدالفطر کے موقع پر عمرقید اور دیگر مقدمات میں قید تمام قیدیوں کے لیے قید میں خصوصی رعایت دینے کا اعلان

کراچی –  وزیرعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے عیدالفطر کے موقع پر عمرقید اور دیگر مقدمات میں قید تمام قیدیوں کے لیے 60 دن کی قید میں خصوصی رعایت دینے کا اعلان کیا ہے، انھوں نے اس رعایت سے مستفیض ہونے والے قیدیوں کو عید سے قبل رہا کرنے کا بھی حکم دیا تاکہ وہ اپنے خاندانوں کے ساتھ عید مناسکیں۔ وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے 60 دنوں کی رعایت سے 3613 قیدیوں کو فائدہ پہنچے گا اور ان میں سے 100 سے زائد قیدی مختلف جیلوں سے رہا ہوجائیں گے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے 28 مئی 2019 کو سینٹرل جیل کراچی کے اپنے دورے کے دوران محکمہ داخلہ کو ہدایت کی تھی کہ وہ سندھ کی جیلوں میں سزا پانے والے قیدیوں کو قید میں خصوصی رعایت دینے سے متعلق انھیں ریفرنس بھیجی لہٰذہ محکمہ داخلہ نے قید میں رعایت کے لیے وزیراعلیٰ سندھ کو ایک سمری دی تھی جس کی آج منظوری دی گئی۔



قید میں خصوصی رعایت کی منظوری وزیرعلیٰ سندھ نے پاکستان پرزنرز رولز 1978 کے رول 216 کے تحت مختلف کیٹیگریز کے تحت سزا پانے والے قیدیوں کو دی ہے جوکہ حسب ذیل ہیں:
60 دنوں کی خصوصی رعایت تمام قیدیوں ماسوائے وہ قیدی جوکہ قتل ، جاسوسی، تخریب کاری، ملک دشمن سرگرمیوں، دہشتگردی کی کاروائیوں، زناء، چوری، ڈکیتی اور فارن ایکٹ 1946 کے تحت سزا پانے والے قیدیوں کے ، اگر انھوں نے اپنی سزا کا دو تہائی حصہ پورا کرلیا ہے ۔ 60 دنوں کی قید میں خصوصی رعایت عمر قید کے تمام قیدیوں ماسوائے وہ قیدی جوکہ قتل ، جاسوسی، دہشتگردی، ملک دشمن سرگرمیوں، فرقہ واریت ، زناء، چوری، ڈکیتی، اغواء/تاوان اور دہشتگردی ایکٹ کے تحت سزا یافتہ ہیں، اگر انھوں نے اپنی سزا کا دو تہائی حصہ پورا کرلیا ہے۔ 60 دنوں قید میں خصوصی رعایت مرد قیدیوں جوکہ 65 سال یا اس سے زائد عمر کے ہیں اور انکی ایک تہائی سزا مکمل ہوچکی ہے کے لیے انکی سزا کی تاریخ سے سالانہ ماسوائے وہ قیدی جوکہ قتل و دہشتگردی ایکٹ جس کی انسداد دہشتگردی ایکٹ 1997 میں شریح کی گئی ہے میں ملوث ہوں۔



60 دنوں کی خصوصی رعایت مرد قیدیوں جوکہ 60 سال یا اس سے اوپر عمر کے ہیں اور اپنی سزا کا کم از کم ایک تہائی سزا مکمل کرچکے ہیں کی سزا کی تاریخ سے سالانہ ماسوائے وہ قیدی جوکہ قتل اور دہشتگردی ایکٹ کے تحت ملوث ہیں ۔ 60 دنوں کی خصوصی رعایت خواتین قیدیوں جوکہ 60 سال یا اس سے اوپر عمر کی ہیں اور کم از کم اپنی سزا کا ایک تہائی حصہ مکمل کرچکی ہوں کیلیے انکی سزا کی تاریخ سے سالانہ ہے ماسوائے وہ جوکہ قتل اور دہشتگردی ایکٹ کے تحت ملوث ہوں۔ 60 دنوں کی خصوصی رعایت خواتین قیدیوں جن کے ساتھ بچے بھی ہیں اور وہ جرائم کے تحت سزا پارہی ہیں کی سزا کی تاریخ سے سالانہ ماسوائے جوکہ قتل اور دہشتگردی ایکٹ کے تحت سزا یافتہ ہوں۔ 60 دنوں کی خصوصی رعایت نابالغ قیدیوں (18 سال سے کم عمر) جوکہ اپنی سزا کا ایک تہائی حصہ مکمل کرچکے ہوں کے لیے سزا کی تاریخ سے سالانہ ماسوائے وہ جوکہ قتل، دہشتگردی ایکٹ، زناء، چوری، ڈکیتی ، اغواء /تاوان اور ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہوں۔