عزیزآباد بلوچ ہوٹل کے قریب سے 14 مئی کو خاتون فرحین تاجی کی لاش ملنے کا واقعہ

کراچی- عزیزآباد پولیس نے مقتولہ فرحین تاجی کے قتل میں ملوث تین ملزموں کو گرفتار کرلیا،  تینوں ملزموں نے مقتولہ کی لاش کو گاڑی میں رکھ کرعزیزآباد بلوچ ہوٹل کے قریب پھینکا،   ملزموں کی گاڑی میں لاش پھینکتے وقت کی سی سی ٹی وی بھی موصول،  گرفتار ملزموں میں خرم سلطان، اشرف اور کاشف شامل ہیں،  گرفتار ملزم خرم سلطان اور مقتولہ فرحین تاجی نشے کے عادی تھے، مقتولہ فرحین کی آئس کے نشے کی زیادتی کے باعث حالت غیر ہوئی تھی،



ملزم خرم سلطان نے مبینہ طور پر مقتولہ فرحین کی حالت غیر ہونے پر اس کا گلا گھونٹ دیا،   مقتولہ کا قتل ڈیفنس میں ہوا پولیس کو چکما دینے کےلیے لاش عزیزآباد میں پھینکی گئی،  قتل میں استعمال ہونے والی گاڑی اور موٹرسائیکل ملزموں کے قبصے سے برآمد کر لی گئی،  تینوں ملزم آئن لائن ٹیکسی کا کام کرتے ہیں، ملزموں کے قبصےسے مقتولہ کا سامان بھی برآمد ہوا،   گرفتار ملزم کاشف برطرف پولیس اہلکار اور صدر پولیس لائن کا رہائشی ہے، ذرائع