فریال تالپور کی سربراہی میں قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس میں آئی جی سندھ کیوں پیش نہیں ہوئے؟

سابق صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ اور پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور کی سربراہی میں قائمہ کمیٹیوں برائے داخلہ کا اہم اجلاس سندھ اسمبلی میں منعقد ہوا لیکن آئی جی سندھ پولیس ڈاکٹر کلیم امام اجلاس میں شریک نہیں ہوئے جس پر قائمہ کمیٹی نے برہمی کا اظہار کیا اور وضاحت مانگی اور آئندہ اجلاس میں آئی جی سندھ کو پیش ہونے کی ہدایت کی گئی۔



ذرائع کے مطابق فریال تالپور اپنی پارٹی کے اراکین کے ہمراہ بڑی تیاری کے ساتھ شریک ہوئی تھیں اور مقصد آئی جی سندھ کو حکومت سندھ کے ماتحت لانے کے اقدامات کا جائزہ لینا تھا کیونکہ موجودہ صورتحال میں آئی جی سندھ خود کو وزیر اعلیٰ کا ماتحت نہیں مانتے اور سندھ اسمبلی نے پولیس ایکٹ میں اس حوالے سے ترمیم کی منظوری کی ہے تاکہ آئی جی سندھ کو وزیر اعلیٰ سندھ کے ماتحت رکھا جا سکے۔صوبے میں وزیراعلیٰ اور آئی جی کے درمیان اختیارات کی کشمکش جاری ہے۔
فریال تالپور  کمیٹی برائے داخلہ کی سربراہی کے لیے تو سندھ اسمبلی میں آگئیں لیکن وہ تو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی ممبر بھی ہیں اور کبھی بھی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کرنے نہیں آئیں۔