عمران خان کی حکومت بچانے کے لئے 20 جون کی تاریخ اہم قرار دے دی گئی

پاکستان کے مشہور تجزیہ نگار اور ریٹائرڈ بیوروکریٹ اوریا مقبول جان نے دعویٰ کیا ہے کہ عمران خان کی حکومت کے لئے نوجون سے 20 جون کے درمیان کا عرصہ انتہائی خطرناک اور فیصلہ کن ہوگا اگر عمران خان اس دوران اپنی حکومت نہ سنبھال سکے تو اپوزیشن جماعتیں مل کر انہیں گھر بھیج دیں گے اور عمران خان اگر بیس جون کی تاریخ نکالنے میں کامیاب ہوگئے تو پھر اوپریشن جماعتوں کی شامت آجائے گی بلاول اور مریم کے اکٹھے ہونے پر تبصرہ کرتے ہوئے سینئر تجزیہ نگار کا کہنا تھا کہ پاکستان پیپلزپارٹی شہری سینٹر سے اب بالکل باہر ہو چکی ہے۔


صرف دیہاتی طبقے کی جماعت بن کر رہ گئی ہے اور اگر یہ چند وڈیروں کو ساتھ نہ ملائیں تو شاید سندھ میں بھی نہ جیت سکے۔وزیراعظم عمران خان کے بارے میں ان کا تذکرہ ہے کہ وہ بہت جلدی جذباتی ہوجاتے ہیں اور یہ بہت بڑا مسئلہ ہے پاکستان کی موجودہ سیاسی صورتحال کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے اندر اس وقت انٹرنیشنل کھلاڑی آچکے ہیں اگر کوئی یہ کہتا ہے کہ پاکستان کی کرنسی کا تعلق معیشت کے ساتھ ہے تو یہ بالکل غلط ہے کرنسی کرنے کا تعلق معیشت سے نہیں ہے ۔اوریا مقبول جان جو سابق سرکاری افسر ہیں اور ٹی وی چینلز پر تجزیہ پیش کرتے ہیں اور اخبارات میں کالم لکھتے ہیں ان کا کہنا ہے کہ عمران خان کی حکومت کے لئے نوجون سے 20 جون کا درمیانی وقت انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔


اس دوران ملک کے اندر ایسی خرابیاں سکتی ہے جس میں یا تو سسٹم کو لپیٹ دیا جائے گا یا عمران خان کی حکومت کو ختم کر دیا جائے گا اور اگر عمران خان اپنی حکومت بچانے میں کامیاب ہوئے اور 20 جون کی تاریخ نکال گئے تو پھر اس کے بعد اپوزیشن جماعتوں کی شامت آجائے گی

اپنا تبصرہ بھیجیں