ڈالر کی وجہ سے پاکستانی معیشت ویل چیئر پر آگئی ہے وزیراعظم فوری طور پر پارلیمانی لیڈرز کانفرنس بلائیں ۔ سید ضیاء عباس

سینئر سیاستدان اور سابق وفاقی وزیر سید ضیاء عباس ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں مسلسل گراوٹ پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈالر کی وجہ سے پاکستانی معیشت ویل چیئر پر آگئی ہے اگر اسے وینچر سے اٹھانے کے لئے مثبت اور ٹھوس اقدامات نہ کیے گئے تو خدانخواستہ کوئی بڑا نقصان بھی ہو سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کو بیک وقت بیرونی اور اندرونی خطرات نے آ گھیرا ہے سرحدوں پر پاک فوج دشمن کے دانت کھٹے کرنے کے لئے پوری طرح چاک وچوبند ہے اب اندرونی محاذ پر معیشت کی گرتی ہوئی صورتحال کا مقابلہ کرنا ہے


وزیراعظم عمران خان کو چاہیے کہ اپنی معاشی ٹیم پر نظر رکھیں نیشنل کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کے لیے ٹھوس اور مثبت اقدامات یقینی بنائیں اور یہ چیک کریں کہ آیا ان کی معاشی ٹیم کے ارکان اس قابل ہیں کہ موجودہ بحرانی صورتحال سے ملک کو نکال سکیں بدترین معاشی صورتحال کی وجہ سے ریاست مشکلات سے دوچار ہیں حکومت کو ایسے اقدامات یقینی بنانے ہیں کہ ہم سرحدوں کے دفاع کے لیے پاک فوج کی دفاعی ضروریات کو بھی پورا کرسکیں اور عوام کو دو وقت کی روٹی بھی کھلا سکے آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر کے حصول کے لیے جو سخت شرائط سامنے آرہی ہیں وہ آنے والے دنوں میں عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ کر سکتی ہیں جس طرح اپوزیشن جماعتوں نے افطار پارٹی پر اکٹھے ہوکر عید کے بعد تحریک چلانے کا عندیہ دیا ہے۔


وزیراعظم عمران خان کو چاہئے کہ فوری طور پر اپنی انا کے خول سے باہر نکلیں اور عید سے پہلے افطار ڈنر پر تمام پارلیمانی لیڈرز کو مدعو کریں اور ان کو ملکی معاشی صورتحال اور دیگر درپیش چیلنجوں کے حوالے سے اعتماد میں لیں اوراس افطارڈنر کو قومی سیاسی کانفرنس کی شکل دے کر سب کی مشاورت سے ملکی معیشت کو بحرانی صورتحال سے نکالنے کے اقدامات کریں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں