ورلڈ کپ اسکواڈ سے باہر ہونے پر جنید خان کا منفرد اور خاموش احتجاج

ورلڈ کپ کے لئے 15 رکنی اسکواڈ سے ڈراپ کیے جانے کے بعد پاکستان کے فاسٹ بولر جنید خان نے چیف سلیکٹر انضمام الحق کی سربراہی میں کام کرنے والی سلیکشن کمیٹی کے خلاف منفرد لیکن خاموش احتجاج کیا ہے جنید خان نے سوشل میڈیا پر ایک تصویر پوسٹ کی ہے جس میں انہوں نے اپنے منہ پر ٹیپ لگایا ہوا ہے اور تحریر کیا ہے کہ میں کچھ نہیں کہنا چاہتا سچ کڑوا ہوتا ہے ۔ واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے ورلڈ کپ کے لیے جو پندرہ رکنی اسکواڈ تشکیل دیا ہے اس میں جنید خان فہیم اشرف یاسر شاہ اور ابدالی کو ڈراپ کیا گیا ہے جنید خان کی جگہ محمدعامر فہیم اشرف کی جگہ بابری اس کو شامل کیا گیا ہے جبکہ آصف علی کو ابدالی کی جگہ اور شاداب خان کو یاسر شاہ کی جگہ ٹیم کا حصہ بنانے کی بات بتائی گئی ہے ۔


جنید خان کا ٹیم سے باہر ہونا لوگوں کے ذہن میں سوالات اٹھا رہا تھا اور جنید خان نے خود ہی سوشل میڈیا پر اپنی تصویر اور احتجاج کرکے سلیکشن کمیٹی کے فیصلوں پر مزید سوالات اٹھا دیے ہیں ۔مرکب کے لیے پندرہ رکنی سکواڈ کا اعلان ہوتے ہی سلیکشن کمیٹی کے فیصلے تنقید کی زد میں آگئے ہیں اور کرکٹ مبصرین اور ماہرین نے ورلڈ کپ کے لئے 15 رکنی اسکواڈ پر متعدد اعتراضات اٹھائے ہیں آنے والے دنوں میں پاکستان کرکٹ بورڈ اس لیکشن کمیٹی کو ان اعتراضات کے حوالے سے وضاحت اور جواب دینے پڑ سکتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں