زہریلا کھانا کھانے سے 5 ہلاکتوں پر وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سندھ فوڈ اتھارٹی سے رپورٹ طلب کرلی

کراچی ۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے مبینہ زہریلا کھانہ کھانے سے 5 ہلاکتوں کا نوٹس لیتے ہوئے سندھ فوڈ اتھارٹی سے رپورٹ طلب کرلی اور کمشنر کراچی کو انکوائری کی نگرانی خود کرنے کی ہدایت کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے ہلاک ہونے والے بچوں کے والدیں سے تفصیلات لیکر ضروری کارروائی کے احکامات جاری کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ خاندان کی ہر قسم کی مدد کی جائے۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے مزید کہا کہ اس قسم کے واقعات ناقابل برداشت ہیں۔ بعد ازاں سندھ فوڈ اتھارٹی کی جانب سے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کو پانچ بچوں کی زہریلا کھانہ کھانے سے ہلاکت پر ابتدائی رپورٹ پیش کرتے ہوئے بتایا گیا کہ پولیس کے مطابق متاثرہ خاندان کوئٹہ سے آیا تھا، خاندان کوئٹہ سے پہنچنے کے بعد قصر ناز میں ٹھرا تھا۔ کوئٹہ سے کراچی سفر کے دوران متاثرہ خاندان نے خضدار اور حب میں کھانا کھایا تھا جب وہ کراچی پہنچے تو انہوں نے پارسل بریانی نوبہار ریسٹورنٹ سے خرید کی جو انہوں نے اپنے کمرے میں کھائی۔ بریانی کھانے کے بعد خاتون نے الٹیاں کرنا شروع کیں اور اس کے شوہر نے اسے آغا خان اسپتال لے گئے، جب وہ صبح اپنی بیوی کو اسپتال سے واپس قصر ناز کے کمرے میں پہنچے تو انکے 5 بچے، ایک رشتیدار کمرے میں بیہوش پڑے تھے، وہ فوراً انکو اسپتال لے گئے لیکن وہ اسپتال میں مردہ تصدیق کیے گئے۔ ؛ وزیراعلیٰ سندھ کو آگاہی فراہم کرتے ہوئے سندھ فوڈ اتھارٹی نے نوبہار ریسٹورنٹ سے کھانے کے نمونے حاصل کیئے ہیں اور قصر ناز روم سے بھی کھانے کے نمونے حاصل کیے گئے ہیں۔ یہ تمام نمونے ٹیسٹ کیلئے بھیجے جا رہے ہیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کمشنر کراچی کو ہدایت کی ہے کہ وہ بچوں کے والدین سے خود جا کر ملیں اور اگر وہ واپس کوئٹہ جانا چاہتے ہیں تو انکے لیے بندوبست کیا جائے۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ مجھے اس واقعہ سے دلی صدمہ ہوا ہے اور میں انکے والدین کی تکلیف محسوس کر رہا ہوں اور انکے ساتھ باقائدہ انصاف کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں