سندھ اسمبلی نے جیل خانہ جات و اصلاحی سہولیات بل 2019 منظور کرلیا

کراچی- جمعہ کوسندھ اسمبلی کے اجلاس میں سندھ کی جیلوں میں اصلاحات متعارف کرانے کا ترمیمی بل صوبائی وزیرمکیش کمارچاؤلہ نے ایوان میں پیش کیا۔ترمیمی بل کے تحت معمولی جرائم میں ملوث خواتین قیدیوں کورہا اور18برس سے کم عمربچوں کوجیل میں قیدنہیں رکھا جائیگا جبکہ سنگین اوردہشتگردی جرائم کے علاوہ 18برس سےکم عمرملزم بچوں کورہاکیاجاسکے گا۔سندھ اسمبلی میں اپوزیشن کے احتجاج کے دوران صوبائی وزیرمکیش کمارچاؤلہ نے ایوان میں جیل خانہ جات و اصلاحی سہولیات بل 2019 کلازبائی کلازپیش کیا جسے کثرات رائے سے منظورکرلیا گیا۔


سندھ میں 125برس بعد جیلوں میں اصلاحات کے لیے نئے قوانین متعارف کرائے گئے سندھ اسمبل میں بل کی منظوری سے قبل اسے بحث ومباحثے کے لیے سلیکٹ کمیٹی میں پیش کیا گیا تھا سندھ جیل خانہ جات و اصلاحی سہولیات بل 2019 کے مندرجات کے مطابق محکمہ جیل خانہ جات کانام اصلاح گھرہوگا معمولی جرائم میں ملوث خواتین قیدیوں کورہااور18برس سے کم عمربچوں کوقیدنہیں کیاجائیگا سنگین اوردہشتگردی جرائم کے علاوہ 18برس سےکم عمرملزم بچوں کورہاکیاجاسکے گا۔ بل میں کہا گیا ہے کہ جیلوں میں صاف پانی کی فراہمی سمیت دیگربنیادی سہولیات فراہم کی جائیں گی اور سزامکمل ہونے پر قیدی کولازمی رہا کیا جائے گا رہائی دی جائیگی ۔ سندھ کی جیلوں میں خواجہ سراوں اورکرمنل قیدیوں کے لیے الگ الگ بیرکس ہونگی ۔ آئی جی جیل کاتقررسینئرڈی آئی جیزمیں سے ہوگاقیدیوں کی بائیومیٹرک میڈیکل اسکریننگ ہوگی ملکی تاریخ میں سزایافتہ اورانڈرٹرائل قیدیوں کے اہلخانہ کوخصوصی الاؤنس بھی ملے گا،گھرکےواحد کفیل قیدیوں کےاہلخانہ کو حکومت ماہانہ گزارہ الاونس دےگی اورقیدی اپنے خرچے پرجیل سے باہرکسی بھی اسپتال سے علاج کراسکے گا۔بل کی منظوری پرصوبائی وزیرمکیش کمارچاؤلہ نے ایوان کومبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ سندھ اسمبلی کی سلیکٹ کمیٹی نئے قانون پر10سے زائداجلاس کیے میں اپوزیشن کا مشکورہوں کہ انہوں نے جیلوں میں اصلاح کے لیے نئے قوانین کی تیاری اورمشاورت میں ہماری مدد کی اورآج یہ ترمیمی بل پاس ہوا۔


اس موقع پراسپیکرسندھ اسمبلی آغاسراج درانی نے صوبائی وزیرکومخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آپ اپوزیشن کومبارکباد دے رہے ہیں مجھے بڑا افسوس ہوتا جورویہ اپوزیشن کے لوگوں نے ایوان میں اختیار کیا ہے اسپیکرکا کہنا تھا کہ جس طرح اپوزیشن ارکان ڈائیس پر چڑھے ہیں اس سے تو سیریز کرائم کا ارتکاب ہوا ہے انہوں نے اپوزیشن کومخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آپ تو خود فوٹو بن گئے ہو اللہ رحم کرے اس طرح کا عمل اختیار کرنا کیا سبق دیتا ہے بعدازاں اسپیکرنے سندھ اسمبلی کا اجلاس ہفتے کی دوپہر تک ملتوی کردیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں