پاکستان کے قرضے ایک ہی دن میں 588 ارب روپے بڑھ گئے

پاکستان میں ڈالر کو پر لگنے اور روپے کی قدر میں تنزلی سے ایک ہی دن میں پاکستان کے قرضے 588 ارب روپے تک بڑھ گئے ہیں میڈیا رپورٹ کے مطابق دوران ٹریڈنگ ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح148روپے تک جا پہنچا جبکہ اختتام پر پانچ روپے ساٹھ پیسے اضافے سے 147 روپے پر بند ہوا ڈالر کی قیمت بڑھ جانے سے ملک پر واجب الادا قرضے ایک ہی دن میں 588 روپے تک بڑھ گئے۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف سے معاہدہ کی شرائط کا پہلے سے ہی عملدرآمد شروع ہوگیا ہے اور ملک میں مہنگائی کی شدید ترین ہر آنے والی ہے لوگ مہنگائی کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہو جائیں۔


دوسری طرف حکومت ڈالر کو قابو کرنے کے لیے اقدامات کر رہی ہے لیکن حکومت کا یہ بھی کہنا ہے کہ حالات مشکل ہیں مولانا مشکلات کی ذمہ داری حکومت سابقہ حکمرانوں پر ڈالتی ہے ۔جبکہ سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار روز اس حکومت کی پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ ان کی نااہلی اور ناقص پالیسی کی وجہ سے حالات بگڑ گئے ہیں جب کہ ہم نے پچھلی حکومت میں صورتحال کو قابو میں رکھا ہوا تھا۔ ایک طرف موجودہ اور سابق حکومتوں پر ان ایک دوسرے پر الزام تراشی میں مصروف ہیں دوسری طرف عوام بڑھتی ہوئی مہنگائی سے بے حال ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں