خودکوجمہوری کہنے والے فوج کو حکومت گرانے کا کہہ رہے ہیں، وزیراعظم

اسلام آباد میں لودھراں تاملتان شاہراہ کی اپ گریڈیشن وبحالی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا اقتدار میں آئے تو کہناشروع ہوگیا کہ کہاں ہے نیا پاکستان۔ لوگوں کوتاثر دیا گیا کہ بٹن دباتے ہی نیا پاکستان سامنے آئے۔

ان کا کہنا تھا کہ جب تک این آراونہیں ملتا تنقید جاری رہے گی۔ کوئی بھی معاشرہ جدوجہد کے بغیر بہتر نظام کی جانب نہیں جاسکتا۔ اسٹیٹس کو کے بینفشریز کبھی بھی فائدہ مند ثابت نہیں ہوسکتے۔

قائداعظم نے آزادی کے لیے جدوجہد جاری رکھا، 1947کےبعد ملکی نظام بدلنے کےلیے جدوجہد جاری ہے۔ ہرجگہ مافیاز بیٹھے ہوئے ہیں جن کے خاتمے کے لیے ہماری جدوجہد جاری ہے۔

خوشحال ممالک میں قانون کی حکمرانی ہے۔ کہاجارہا ہے کہ حکومت کو گرادو۔ ان کی چوریاں سامنے آرہی ہیں اس لیے حکومت گرانے کے لیے دباوَ ڈال رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے ڈھائی سال بہت صبرسے کام لیا۔ پہلا سال معاشی استحکام ،دوسرا کورونا سے نمٹنے میں گزرا۔ مشکل وقت سے نکل گئے ہیں اب ترقی کا دور ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا صنعتوں کوکھڑا کیا، کسانوں کوپیسے دے رہےہیں اور معیشت بھی بہترہورہی ہے۔ کسانوں کے لیے پیکج لارہے ہیں۔ چین کے ساتھ سی پیک کے دوسرے فیز میں جارہے ہیں۔

تعمیراتی شعبے کی سرگرمیوں میں اضافہ ہواہے اورلوگوں کو روزگار مل رہا ہے۔ ہم نے عدالت سے بینک کاقانون کلیئر کراویا اوراب لوگوں کوقرضے مل رہے ہیں