تم انڈے سے چونچ تو باہر نکال لو…

پاکستانی پارلیمنٹ کے ایوان بالا سینیٹ کے اجلاس میں اس وقت گرما گرمی ہوگئی یا مسلم لیگ نون کے سینیٹر مشاہداللہ پر حکومتی جماعت تحریک انصاف کے نوجوان سینیٹر فیصل جاوید میں جھڑپ اور لفظی تکرار ہوئی۔ اجلاس میں چوزے اور باباجی کی تکرار نے سب اراکین کی توجہ حاصل کرلی اور اجلاس کے بعد میڈیا کی خبروں میں بھی یہی تکرار زیر بحث رہی۔ اجلاس کے دوران قومی ایئرلائن پی آئی اے کے ہیڈکوارٹر کی ممکنہ اسلام آباد منتقلی کے خلاف قرارداد پر بحث کے دوران تقریر میں مداخلت پر مشاہداللہ خان نے فیصل جاوید کو چوزہ کہہ دیا جس پر فیصل جاوید نے مشاہد اللہ کو بابا جی کہہ کر جواب دیا۔


مشاہد اللہ خان نے فیصل جاوید سے کہا کہ تم انڈے سے چونچ تو باہر نکال لو فیصل جاوید نے جواب دیا کہ مشاہداللہ اپنی عمر دیکھیں اور اخلاقیات دیکھیں اس پر مشاہداللہ بولے ہمیں آپ اخلاقیات نہ سکھائیں علیمہ باجی سے اخلاقیات سیکھیں اس پر فیصل جاوید نے کہا کہ ان کی عمر دیکھیں اور کرتوت دیکھیں چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ وہ یہ گفتگو اور لفظ چوزہ ہضم کر آتے ہیں جس میں مشاہداللہ خان نے کہا کہ ان کو خود پورا حذف کیا جائے سینیٹ میں پیپلزپارٹی کی رکن شیری رحمان کی جانب سے پی آئی اے ہیڈکوارٹر اسلام آباد منتقل نہ کرنے کی قرارداد کثرت رائے سے منظور کرلی قرارداد پر اپوزیشن کے بیالیس ارکان کے دستخط تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں