گوادر میں مسلح افراد کے فائیو سٹار ہوٹل پر حملے کے بعد بی ایل اے نے ذمہ داری قبول کرلی

بلوچستان کے ساحلی شہر گوادر میں مسلح افراد نےپی سی ہوٹل پر حملہ کیا سیکورٹی فورسز نے بروقت جوابی کارروائی کی سیکیورٹی فورسز نے ہوٹل میں موجود فضائی مسافروں اور عملے کو باحفاظت نکال لیا پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق دہشتگردوں نے داخل ہونے کی کوشش کی تھی داخلہ گیٹ پر موجود گارڈزنے دہشتگردوں کو روکا دہشتگردوں کی فائرنگ سے پی سی ہوٹل کا ایک سکیورٹی گارڈ شہید ہوا پولیس ایف سی اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی فورسز نے بھرپور جوابی کارروائی کی اور حملہ آوروں کو ہوٹل کے پہلے فلور تک محدود کردیا ظہور بلیدی کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے ہوٹل میں پھنسے تمام لوگوں کو بحفاظت نکال لیا ہے حملے کے وقت ہوٹل میں کوئی غیر ملکی مہمان موجود نہیں تھا ۔


سیکورٹی فورسز کے مطابق گوادر پی سی  PC ہوٹل پر دہشت گرد حملہ ناکام ہوگیا اور تمام دہشت گرد جہنم واصل کر دیے گئے تین گھنٹے طویل آپریشن کے بعد سیکیورٹی فورسز نے تمام چار دہشتگردوں کو جہنم واصل کیا پی سی ہوٹل کی عمارت کو کلیئر قرار دے دیا گیا کسی غیر ملکی کو نقصان نہیں پہنچا،  حملے کی ذمہ داری کالعدم بی ایل اے بلوچستان لبریشن آرمی نے قبول کرلی اور موقف اختیار کیا کہ حملے کا مقصد ہوٹل میں قیام کرنے والے چینی اور دیگر غیر ملکیوں کو نشانہ بنانا تھا لیکن سکیورٹی فورسز نے بی ایل اے کا حملہ اور منصوبہ ناکام بنا دیا آئی ایس پی آر کے مطابق گوادر کے حالات سیکورٹی فورسز کے کنٹرول میں ہیں ہوٹل میں دہشتگردوں اور فورسز کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا تھا ۔


پی سی ہوٹل کے قریب آبادی بہت کم ہے یہ بات قابل ذکر ہے کہ سی پیک کے حوالے سے گوادر پورٹ بہت اہم مقام ہے گوادر کے راستے دنیا بھر میں تجارت کی راہیں کھلی ہیں اور دشمن کی نظر گوادرپورٹ پرلگی ہوئی ہے دشمن پاکستان کی تجارتی سرگرمیوں کو محدود کرنا چاہتا ہے اور پاکستان کے اہم تجارتی روٹ سی پیک اور گوادر پر حملے کرنا چاہتا ہے ماضی میں بلوچستان سے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو بھی گرفتار ہوچکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں